رسائی کے لنکس

فوجیوں کے جنازے کے جلوس پر احتجاجی مظاہرے: امریکی سپریم کورٹ معاملے پر فیصلہ کرے گی


فائل فوٹو

فائل فوٹو

آیا ایسے احتجاجی مظاہرین کو جو فوجیوں کی تجہیز و تدفین کے موقع پر اشتعال انگیز پیغامات کے کتبے لے کر کھڑے ہوتے ہیں، آئین کے آزادیِ اظہار کے حق کے تحت تحفظ حاصل ہے؟

امریکی سپریم کورٹ نے اِس بات پرغور کرنے پر آمادگی کا اظہار کیا ہے آیا ایسے احتجاجی مظاہرین کو جو فوجیوں کی تجہیز و تدفین کے موقع پر اشتعال انگیز پیغامات کے کتبے لے کر کھڑے ہوتے ہیں، آئین کے آزادیِ اظہار کے حق کے تحت تحفظ حاصل ہے۔

مقدمے کا تعلق ایک ایسے فرد سے ہے جس نے کینساس کی ویسٹ بورو بیپٹسٹ چرچ کے خلاف ایک مقدمہ دائرکرکے اُس کے خلاف 50لاکھ ڈالر کا حرجانہ جیتا۔ اِس چرچ کے ارکان نے عراق میں ہلاک ہونے والے اُس کے فوجی بیٹے کی تدفین کے موقعے پر احتجاج کیا تھا۔

ویسٹ بورو چرچ کے ارکان فوجی جنازوں کے موقعوں پر اِس قسم کے کتبے اُٹھا کر احتجاج کرتے رہے ہیں کہ فوجی اِس لیے ہلاک ہوئے کیونکہ امریکہ میں ہم جنس پرستی کو برداشت کیا جاتا ہے۔

ایک وفاقی اپیل کورٹ نے 50لاکھ ڈالر کے فیصلے کو یہ کہتے ہوئے مسترد کردیا تھاکہ آئین کےآزادیِ اظہار کے قانون کے تحت احتجاج کو تحفظ حاصل ہے۔

XS
SM
MD
LG