رسائی کے لنکس

ممتاز مزاح نگار مجتبیٰ حسین کواعزازی ڈاکٹریٹ

  • رشیدالدین

ممتاز مزاح نگار مجتبیٰ حسین کواعزازی ڈاکٹریٹ

ممتاز مزاح نگار مجتبیٰ حسین کواعزازی ڈاکٹریٹ

برصغیر ہندوپاک کے ممتاز مزاح نگار مجتبیٰ حسین کو ان کی طویل خدمات کے اعتراف میں کرناٹک کی گلبرگہ یونیورسٹی نے ڈاکٹریٹ کی اعزازی ڈگری سے نوازا ہے۔ چند روز پیشتر یونیورسٹی کے کانووکیشن میں یہ اعزاز عطاکیا گیا۔ مجتبیٰ حسین کا شمار برصغیر کے ان گنے چنے مزاح نگاروں میں ہوتا ہے جنہوں نے روایات سے ہٹ کر سلگتے مسائل پر قلم اٹھاتے ہوئے سماج اور ارباب اقتدار کو جگانے کی کوششس کی ہے۔

انہوں نے کبھی حالات سے سمجھوتہ نہیں کیا بلکہ حالات کو اپنے آگے سر تسلیم خم کرنے پر مجبور کردیا۔ 42 برسوں سے زائد کے اپنے ادبی سفر میں انہوں نے کئی نشیب و فراز دیکھے لیکن حالات کا مقابلہ کیا۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہوگا کہ مجتبیٰ حسین کے داماد کا حالیہ عرصہ میں اچانک انتقال ہو گیا اور یہ ایسا غم تھا کہ جس نے ان کی پرمزاح شخصیت کو سنجیدگی میں بدل دیا۔ اس کے باوجود مجتبیٰ حسین نے اپنے پڑھنے والوں کو مایوس نہیں کیا بلکہ اپنے غم کو اپنی تحریروں کے ذریعہ وقتی طور پر ہی سہی کم کرنے کی کوشش کی۔

ان کا کہنا ہے کہ ایک مزاح نگار کی زندگی میں ایک ایسا وقت آتا ہے کہ اس کی زندگی خود مزاح کا موضوع بن جاتی ہے۔

مجتبیٰ حسین کا تعلق کرناٹک کے گلبرگہ سے ہے اور ان کے دو بڑے بھائی الگ الگ شعبوں کے ماہر تھے۔ بڑے بھائی محبوب حسین جگر ایک مایہ ناز صحافی تھے جب کہ ابراہیم جلیس ادیب تھے۔ مجتبیٰ حسین کی دلادت 15 جولائی 1936 کو گلبرگہ میں ہوئی۔ ابتدائی تعلیم گھر پر ہوئی۔ 1956 میں عثمانیہ یونیورسٹی سے گریجویشن کیا۔ جوانی سے ہی انہیں طنزومزاح کی تحریروں کا ذوق تھا جس کی تکمیل کے لئے روزنامہ سیاست سے وابستہ ہوگئے اور وہیں سے ان کے ادبی سفر کا آغاز ہوا۔

1962 میں محکمہ اطلاعات میں ملازمت کاآغاز کیا۔ 1972 میں دلی میں گجرال کمیٹی کے ریسرچ شعبہ سے وابستہ ہوگئے۔ دلی میں مختلف محکموں میں ملازمت کے بعد 1992ء میں ریٹائر ہوگئے۔ مجتبیٰ حسین ملک کے پہلے طنزومزاح کے ادیب ہیں جن کو وفاقی حکومت نے بحیثیت مزاح نگار پدم شری کے باوقار سویلین اعزاز سے نوازا۔

مجتبیٰ حسین کے مضامین پر مشتمل 22 سے زائد کتابیں شائع ہوچکی ہیں۔ ان کی 7 کتابیں ہندی زبان میں شائع ہویئں۔ جاپانی اور اڑیہ زبان میں بھی ایک ایک کتاب شائع کی گئی۔ انہیں 10 سے زائد ایوارڈز حاصل ہوئے جن میں غالب ایوارڈ، مخدوم ایوارڈ، کنور مہندر سنگھ بیدی ایوارڈ، جوہر قریشی ایوارڈاوراور میر تقی میر ایوارڈ شامل ہیں۔

مجتبیٰ نے 11 ملکوں کا سفر کیا جن میں امریکہ، سعودی عرب، روس، پاکستان، جاپان اور برطانیہ کے نام قابلِ ذکر ہیں۔

XS
SM
MD
LG