رسائی کے لنکس

ممبئی حملوں کی چوتھی برسی:ہلاک شدگان کو خراجِ عقیدت

  • سہیل انجم
  • نئی دہلی

ممبئی حملے برسی

ممبئی حملے برسی

اصل پروگرام چوپاٹی میں ممبئی پولیس جیم خانہ میں منعقد ہوا جہاں 26نومبر کے نام ایک مستقل یادگار قائم کی گئی

ممبئی حملوں کے دوران واحد زندہ پکڑے گئے حملہ آور اجمل عامر قصاب کو پھانسی پر لٹکائے جانے کےپانچ روز بعد حملوں کی چوتھی برسی کے موقع پر ممبئی میں متعدد پروگرام منعقد کیے گئے اور حملوں میں ہلاک ہونے والوں کو خراجِ عقیدت پیش کیا گیا۔

چار سال قبل 26نومبر کو 10دہشت گردوں نےممبئی کےپانچ مقامات سی ایس ڈی، تاج محل پیلس ہوٹل، اوبرائے ٹرئی ڈینٹ، لیو پول کیفے اور نریمن ہاؤس پرحملے کیے تھے اور 60گھنٹے تک جاری رہنے والے تصادم میں 166افراد ہلاک ہوئے تھے۔

مذکورہ پانچوں مقامات پر خراجِ عقیدت پیش کرنے کے لیے پروگراموں کا انعقاد کیا گیا۔

اصل پروگرام چوپاٹی میں ممبئی پولیس جیم خانہ میں منعقد ہوا جہاں 26نومبر کے نام ایک مستقل یادگار قائم کی گئی ہے۔

مرکزی وزیر داخلہ سشیل کمار شِنڈے، اُن کے قانونی مشیرشراد پوار، مہاراشٹر کے گورنر کے شنکر نارائنن، وزیر اعلیٰ پرتھوی راج چوہان، وزیر داخلہ آر آر پاٹل، ممبئی پولیس کمشنر ستے پال سنگھ اور حملوں میں مارے جانے والوں کے اہلِ خانہ نے پھولوں کے گلدستے چڑھا کر ہلاک شدگان کو یاد کیا اور خراجِ عقیدت پیش کیا۔اِس موقع پر ممبئی کی رفتار کچھ لمحوں کے لیے تقریباً ٹھہر سی گئی تھی۔

اجمل عامر قصاب کو پھانسی دیے جانے سے جہاں اہلِ ممبئی اور حملوں کے شکار لوگوں کے اہل خانہ نےاطمینان کا اظہار کیا ہے وہیں ہلاک شدگان کے اہلِ خانہ نے یہ بھی کہا ہے کہ اجمل عامر قصاب کو پھانسی دینے سے اُن کے اعزا واپس نہیں آسکتے۔

حملوں کے دوران، ممبئی انسدادِ دہشت گردی دستے کے سربراہ ہیمنت کرکرے کی بھی موت ہوگئی تھی۔ اُن کی بیواہ نے اپنے ردِ عمل میں کہا ہے کہ اجمل قصاب کی پھانسی سے اُن کے شوہر واپس نہیں آسکتے۔ اُن کے خیال میں آج بھی ممبئی محفوظ نہیں ہے۔ اُن کے بقول، میں سمجھتی ہوں کہ دہشت گردی مخالف جنگ اب شروع ہوئی ہے۔ممبئی محفوظ نہیں ہے، کیونکہ 26نومبر کے بعد بھی ممبئی اور پونے میں بم دھماکے ہوئے ہیں۔

اجمل قصاب کو پھانسی دینے میں چار سال لگ گئے۔ تاہم، حملوں کے شکار بہت سے خاندانوں کو اب بھی انصاف کے لیے مزید انتظار کرنا پڑے گا۔متاثرہ 88خاندانوں کو معاوضے کی شکل میں ابھی وہ تین لاکھ روپے نہیں ملے جس کا اعلان حملوں کے بعد مرکزی وزارتِ داخلہ نے کیا تھا۔چیف سیکریڑی کا کہنا ہے کہ معاوضوں کی تقسیم کا عمل ابھی جاری ہے اور تین لاکھ روپے ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ کو دیے جائیں گے نہ کہ زخمیوں کو۔

چھبیس نومبر کو چوتھی برسی کے موقع پر ممبئی میں زبردستی حفاظتی انتظامات کیے گئے تھے۔
XS
SM
MD
LG