رسائی کے لنکس

روسی جیٹ امریکی جاسوس طیارے کے چھ میٹر قریب سے گزرا: بحریہ


فائل

امریکی بحریہ کی خاتون ترجمان، پامیلا کُنز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سارے معاملے سے ’’محفوظ اور پیشہ وارانہ‘‘ انداز سے نمٹا گیا؛ اور اس بات کو زیادہ اہمیت نہیں کرائی کہ روسی طیارہ امریکہ جہاز کے قریب آچکا تھا

امریکی بحریہ نے جمعے کے روز بتایا ہے کہ اس ہفتے کے اوائل میں بحیرہٴ اسود کے خطے میں ایک روسی جیٹ طیارہ پرواز کرنے والے ایک امریکی جاسوس طیارے سے چھ میٹر کے قریب سے گزرا۔ لیکن، معاملے سے پیشہ وارانہ طور پر نمٹا گیا۔


روسی وزارتِ دفاع کے مطابق، روسی جیٹ نے منگل کے روز بین الاقوامی فضائی حدود میں پرواز کرتے ہوئے امریکی بحریہ کے ’پی 8اے پوئسڈون‘ طیارے کا استقبال کیا، ایسے میں جب امریکی جہاز روسی علاقے کے قریب تھا۔


بیان میں کہا گیا ہے کہ طیارے کو پہچاننے کی غرض سے آیا یہ امریکی جہاز ہی ہے، محفوظ فاصلے سے، روسی پائلٹ نے جاسوس طیارے سے رابطہ کیا، اس جانب توجہ مبذول کرائی کہ اس واقعے کے بعد امریکی طیارے نے اپنا رخ موڑا اور روسی طیارہ اپنے اڈے کی جانب لوٹ گیا۔


امریکی بحریہ کی خاتون ترجمان، پامیلا کُنز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سارے معاملے سے ’’محفوظ اور پیشہ وارانہ‘‘ انداز سے نمٹا گیا؛ اور اس بات کو زیادہ اہمیت نہیں کرائی کہ روسی طیارہ امریکہ جہاز کے قریب آچکا تھا۔


اُنھوں نے کہا کہ ’’ہوا بازی کے اعتبار سے جنبش، فاصلہ، رفتار، اونچائی، قربت، نظر آنا اور دیگر ایسے عناصر پر دارومدار ہوتا ہے آیا یہ پرواز کا محفوظ یا غیر محفوظ انداز تھا، پیشہ وارانہ تھا یا غیر پیشہ وارانہ نوعیت کا تھا‘‘۔


بقول ترجمان، ’’ہر معاملہ اپنی نوعیت کا ہوتا ہے؛ اور کوئی ایک واحد عمل معاملے وضاحت کرتا ہے‘‘۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG