رسائی کے لنکس

نیویارک میں دھماکے سے 29 افراد زخمی


ادھر نیو جرسی میں ایک پائپ بم دھماکا ہوا جس سے کوئی زخمی تو نہیں ہوا لیکن یہاں فلاحی ادارے کی طرف سے منعقدہ دوڑ کو منسوخ کر دیا گیا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کرنا تھی۔

امریکہ کے دو مختلف شہروں میں دھماکوں سے کم ازکم 29 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

ہفتہ کو دیر گئے نیویارک کے علاقے چیلسی میں ایک زور دار دھماکا ہوا جس کی زد میں آکر 29 افراد زخمی ہوئے۔

نیویارک کے میئر بل ڈی بلاسیو نے صحافیوں کو بتایا کہ "فی الوقت اس واقعے کا دہشت گردی سے کوئی تعلق معلوم نہیں ہوتا ہے"، لیکن ان کے بقول حکام کا ماننا ہے کہ یہ دھماکا "دانستہ کارروائی" تھی۔

انھوں نے شہریوں کو یقین دلایا کہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے تمام ادارے پوری طرح چوکس ہیں۔

اب تک کی اطلاعات کے مطابق 27 اسٹریٹ میں ہونے والا یہ دھماکا بظاہر پریشر ککر کو ایک موبائل فون سے منسلک کر کے کیا گیا اور پولیس نے قرب وجوار کے رہائشیوں کو کھڑکیوں سے دور رہنے کی ہدایت کی ہے۔

امدادی کارکنان اور پولیس فوری طور پر جائے وقوع پر پہنچی۔ پولیس یہاں رکھے تمام کوڑے دانوں اور کھڑی گاڑیوں کے نیچے تلاشی کی کارروائی جاری رکھے ہوئے ہے۔

عینی شاہدین کے مطابق جائے وقوع کے قریب واقع بس اور سب وے اسٹیشن پر گاڑیوں کی آمدورفت رک گئی اور یہاں سے لوگوں کی ایک بڑی تعداد کو بھاگتے ہوئے دیکھا گیا۔

دھماکے کی جگہ کے قریب ہی موجود وائس آف امریکہ کے ایک رپورٹر کے مطابق یہ ایک ہی زور دار دھماکا تھا۔ عینی شاہدین کے مطابق جائے وقوع کے قریب واقع عمارتوں کے شیشے بھی ٹوٹے ہیں۔

پولیس نے قریب ہی واقع دو اہم راستوں اسکتھ ایونیو اور سیونتھ ایونیو کو بند کر دیا ہے۔

اس واقعے سے قبل ہفتہ کو ہی نیو جرسی میں ایک پائپ بم دھماکا ہوا جس سے کوئی زخمی تو نہیں ہوا لیکن یہاں فلاحی ادارے کی طرف سے منعقدہ دوڑ کو منسوخ کر دیا گیا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کرنا تھی۔

نیو جرسی میں پائپ بم کوڑے دان میں رکھا گیا تھا

نیو جرسی میں پائپ بم کوڑے دان میں رکھا گیا تھا

وفاقی تحقیقاتی ادارے "ایف بی آئی" اس واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے لیکن حکام نے تاحال یہ نہیں کہا ہے کہ یہ واقعہ دہشت گردی کی کارروائی ہو سکتی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ انھیں یہاں سے تین پائپ بم ملے ہیں اور بظاہر ایک بم ہی دھماکے سے پھٹا ہے۔

XS
SM
MD
LG