رسائی کے لنکس

نائیجیریا: چرچ کی چھت منہدم، ہلاکتوں کی تعداد 160 ہو گئی


فائل فوٹو

فائل فوٹو

گورنر کے ایک ترجمان کا کہنا تھا کہ ریاستی حکومت اس معاملے کی مکمل تحقیقات کروائے گی اور اس بات کا بھی تعین کیا جائے گا کہ آیا عمارت کی تعمیر میں تو کوتاہی نہیں برتی گئی۔

نائیجیریا میں حکام اور عینی شاہدین نے بتایا ہے کہ ایک چرچ کی چھت منہدم ہونے سے وہاں موجود کم از کم 160 افراد افراد ہلاک ہو گئے۔

ہفتہ کو ریاست اکوا ابوم کے مرکزی شہر اویو کے ریئگنرز بائبل چرچ میں ایک تقریب جاری تھی جس میں اطلاعات کے مطابق سیکڑوں افراد شریک تھے کہ اچانک اس کی چھت گر گئی۔

شرکا میں ریاست کے گورنر اودوم امینئیول بھی موجود تھے لیکن وہ محفوظ رہے۔ بتایا جاتا ہے کہ چرچ کی تعمیر پوری طرح سے مکمل نہیں ہوئی تھی اور اسے مبینہ طور پر تقریب کے لیے جلد بازی میں تیار کیا گیا۔

ہفتہ کو دیر گئے 60 افراد کی لاشیں یہاں سے نکالی جا چکی تھیں لیکن خدشہ ہے کہ اب بھی لوگ ملبے تلے دبے ہو سکتے ہیں جس سے ہلاکتوں میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

گورنر کے ایک ترجمان کا کہنا تھا کہ ریاستی حکومت اس معاملے کی مکمل تحقیقات کروائے گی اور اس بات کا بھی تعین کیا جائے گا کہ آیا عمارت کی تعمیر میں تو کوتاہی نہیں برتی گئی۔

نائیجیریا میں عمارتوں کے انہدام کے واقعات غیر معمولی نہیں ہیں جن کی عمومی وجہ اکثر ناقص تعمیراتی مواد اور غیر قانونی انداز میں طرز تعمیر بتائی جاتی ہے۔

2014ء میں ملک کے تجارتی مرکز لاگوس میں ایک چرچ کی عمارت گرنے سے 116 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

XS
SM
MD
LG