رسائی کے لنکس

میکسیکو اور کوسٹا ریکا کا دورہ، تجارتی تعاون کا فروغ اولین ترجیح


اِس سہ روزہ دورے میں، مسٹر اوباما میکسیکو کے نئے صدر اینرک پینا نائیٹو سے ملاقات کریں گے، جب کہ کوسٹا ریکا میں وسطی امریکہ کے خطے کےراہنماؤں کے ایک سربراہ اجلاس کے دوران شریک لیڈروں سے ملیں گے

امریکی صدر براک اوباما جمعرات کو میکسیکو اور کوسٹا ریکا کے دورے پر روانہ ہورہے ہیں، جِس کا مقصد تجارتی تعلقات کو مضبوط کرنا اور تارکین وطن سے متعلق امریکی اصلاحات پر بات چیت کے علاوہ، سلامتی کو لاحق خطرات اور منشیات کی نقل و حمل کے جھگڑوں سے متعلق معاملات زیرِ بحث لانا ہے۔

اِس سہ روزہ دورے کے دوران، مسٹر اوباما میکسیکو کے نئے صدر اینرک پینا نائیٹو سے ملاقات کریں گے، جب کہ کوسٹا ریکا میں وسطی امریکہ کے خطے کےراہنماؤں کے ایک سربراہ اجلاس کے دوران شریک لیڈروں سے ملیں گے۔

صدر اوباما نے منگل کو کہا کہ میکسیکو کے دورے میں دھیان معاشی معاملات پر مرکوز رہے گا، تاکہ دونوں ممالک کے مابین معاشی تعلقات کو فروغ دینے پر غور کیا جاسکے۔

اُن کے بقول، معاشی امور پر بہت زیادہ توجہ مبذول کی جارہی ہے۔

صدر اوباما کے الفاظ میں: ’امریکہ اور میکسیکو نے سلامتی کے امور پر بہت زیادہ وقت صرف کیا ہے، اس حد تک کہ یہ بات نظروں سے اوجھل سی رہی کہ ہم اہم تجارتی ساجھے دار ہیں جہاں کاروبار کے بڑے امکانات ہیں اور سرحد کے دونوں اطراف روزگار کے بڑے مواقع موجود ہیں۔ ہمیں یہ دیکھنا ہوگا کہ ایک طویل مدت تک ہم معاشی مکالمے کو کس طرح سے بہتر کر سکتے ہیں اور جاری رکھ سکتے ہیں‘۔

مسٹر اوباما نے کہا کہ بات چیت میں منشیات کی اسمگلنگ سے وابستہ بین القومی ٹولوں سے نبردآزما ہونے کی حکمت عملی وضع کرنے کے سلسلے میں مل کر کام کرنے پر بھی غور ہوگا۔

امریکی صدر نے کہا کہ حالیہ برسوں کے دوران دونوں حکومتوں کے مابین باہمی تعاون کے ضمن میں بہتری آئی ہے، تاہم اس تعاون میں مزید بہتری لائی جاسکتی ہے۔

مسٹر اوباما نے کہا کہ کوسٹا ریکا میں وسط امریکی راہنماؤں کے ساتھ بات چیت میں اِسی نوع کے معاملات زیر بحث آئیں گے۔

اُنھوں نے کہا کہ امریکہ علاقے میں مربوط کوششوں کا خواہاں ہے، تاکہ تمام اقوام کی معیشت اور سلامتی میں بہتری لائی جاسکے۔
XS
SM
MD
LG