رسائی کے لنکس

2015 میں دس لاکھ سے زائد پناہ گزین یورپ پہنچے: اقوام متحدہ


ربڑ کی کشتی میں یونان کے جزیرے لیسبوس پہنچنے والے پناہ گزین۔ (فائل فوٹو)

ربڑ کی کشتی میں یونان کے جزیرے لیسبوس پہنچنے والے پناہ گزین۔ (فائل فوٹو)

سمندری راستے سے یورپی یونین پہنچنے والے 1,000,573 مہاجرین میں اسی فیصد سے زائد یونان پہنچے جن کی بیشتر تعداد لیسبوس جزیرے میں پہنچی۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین نے کہا ہے کہ 2015 کے شروع سے اب تک 10 لاکھ سے زائد مہاجرین سمندر پار کر کے یورپی یونین میں داخل ہو چکے ہیں۔ گزشتہ سال یہ تعداد 216,000 تھی۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین نے بدھ کو کہا کہ سمندری راستے سے یورپی یونین پہنچنے والے 1,000,573 مہاجرین میں اسی فیصد سے زائد یونان پہنچے جن کی بیشتر تعداد لیسبوس جزیرے میں پہنچی۔

یونان پہنچنے والے اکثر مہاجرین ترکی سے آئے تھے۔ دیگر کی اکثریت لیبیا سے بحیرہ روم عبور کر کے اٹلی پہنچی۔

ادارے کا کہنا ہے کہ پناہ گرینوں کی نصف تعداد شام سے فرار ہونے والے افراد کی ہے جبکہ 21 فیصد افغانستان سے آئے ہیں۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین نے کہا ہے کہ جنگ، سیاسی ظلم و ستم اور اقتصادی مشکلات سے بچنے کے لیے یورپ پہنچنے کے لیے بے چین پناہ گزین شکستہ یا ربڑ کی کشتوں میں سفر کر کے اپنی جانوں کو خطرے میں ڈالتے ہیں۔

اس سال بحیرہ روم پار کرنے کی کوشش کے دوران کم از کم 3,735 پناہ گزین ہلاک یا لاپتا ہو چکے ہیں۔

XS
SM
MD
LG