رسائی کے لنکس

پاکستانی فوجی وفد کا دورہ امریکہ احتجاجاً منسوخ

  • ب

پاکستانی فوجی وفد کا دورہ امریکہ احتجاجاً منسوخ

پاکستانی فوجی وفد کا دورہ امریکہ احتجاجاً منسوخ

پاکستان نے امریکی محکمہء دفاع کی دعوت پر” سینٹ کام“ کے ایک اجلاس میں شرکت کے لیے امریکہ بھیجے گئے ایک اعلیٰ سطحی فوجی وفد کا دورہ احتجاجاً منسوخ کرکے اُسے وطن واپس بلالیا ہے۔

فوج کے ترجمان میجر جنرل اطہرعباس نے ایک مختصر بیان میں کہا ہے کہ امریکی ٹرانسپورٹ سکیورٹی ایجنسی نے واشنگٹن ائرپورٹ پر وفد کے ارکان کی ”غیر ضروری سکیورٹی چیکنگ“ کی جس پر بعد میں امریکی محکمہء دفاع کے حکام نے معذرت بھی کر لی۔

لیکن اُنھوں نے کہا کہ اس واقعہ کے بعد احتجاجاََ پاکستان میں فوجی حکام نے وفد کا دورہ منسوخ کرکے اُسے واپس بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔

واشنگٹن پوسٹ اخبار کا کہنا ہے کہ ”سینٹ کام“ کے اجلاس میں شرکت کی غرض سے ریاست فلوریڈا کے شہر ٹیمپا جانے کے لیے پاکستانی فوجی افسران کا وفد ڈیلس ائرپورٹ پر ایک مسافر جہاز پر سوار ہوا تھا۔

یونائیٹڈ ائر لائنز کمپنی کا کہنا ہے کہ ایک پاکستانی فوجی جنرل نے جہاز کے میزبان کے ساتھ ”بدکلامی“ کی جس پر عملے نے ائرپورٹ سکیورٹی سے فوری طور پر رابطہ کیا اور وفد کو جہاز سے اُتار دیا گیا۔

تاہم پاکستانی حکام کا کہنا ہے کہ ایک مسافر نے جہاز کے عملے سے شکایت کی تھی کہ اُسے وفد سے خطرہ محسوس ہو رہا ہے۔ ڈیلس ائرپورٹ پر حکام نے پاکستانی فوجی افسران کو کئی گھنٹوں تک حراست میں رکھنے کے بعد رہا کردیا۔

وفد کے ارکان نے امریکی حکام کے توہین آمیز رویے کی شکایت کی جس پر انھیں اسلام آباد سے حکم دیا گیا کہ وہ فوراََ وطن واپس آجائیں۔ پاکستانی حکام کا کہنا ہے کہ دوران حراست وفد کو پاکستانی سفارت کاروں یا امریکی فوجی افسران سے رابطہ کرنے کی اجاز ت بھی نہیں دی گئی۔

XS
SM
MD
LG