رسائی کے لنکس

پاکستانی کاشت کاروں کے لیے امریکہ کا پانی برائے بجلی پروگرام


پاکستانی کاشت کاروں کے لیے امریکہ کا پانی برائے بجلی پروگرام

پاکستانی کاشت کاروں کے لیے امریکہ کا پانی برائے بجلی پروگرام

امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یوایس ایڈ) نے پاکستان کے اشتراک سے کاشت کاروں کے لیے بجلی برائے پانی پروگرام شروع کیا ہے جس سے پاکستانی کاشت کاروں آئندہ سولہ ماہ کے دوران ٹیوب ویلوں کے ناقص کارکردگی والے پمپوں کو توانائی کے باکفایت استعمال کے حامل پمپوں سے بدل کر 77لاکھ ڈالر کی بچت کرنے کے قابل ہوجائیں گے۔

بدھ کو پنجاب میں شروع کیے جانے والے اس پروگرام سے کاشت کاروں کو پیسے اور سالانہ 45میگاواٹ بجلی بچانے کے قابل بنایا جائے گا۔

امریکی سفارتخانے سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق بجلی برائے پانی پروگرام امریکہ کی جانب سے جاری ان چھ ترقیاتی سرگرمیوں میں سے ایک ہے جن کا وزیرخارجہ ہلری کلنٹن نے گذشتہ برس اعلان کیا تھا تاکہ پاکستان میں توانائی کی قلت کو کم کیاجاسکے۔

زراعت کا شعبہ پاکستان میں توانائی کا ایک بڑا صارف ہے اور کاشت کاروں کی جانب سے آبپاشی کے لیے ٹیوب ویلوں کے استعمال میں بجلی کی انتہائی طلب کا بڑا حصہ صرف ہوتا ہے۔

اس وقت استعمال ہونے والے پمپوں کی کارکردگی صرف 30فیصد ہے۔یو ایس ایڈ لگ بھگ گیارہ ہزار پمپ تبدیل کرے گا۔

بیان کے مطابق یو ایس ایڈ کے قائم مقام ڈائریکٹر ڈینس ہربل نے کہا کہ وہ پرامید ہیں کہ ان کا ادارہ بجلی برائے پروگرام کے ذریعے زراعت کے شعبے میں بجلی کے کم استعمال کی ایک مثال قائم کرے گا۔ انھوں نے کہ اکہ اس کاوش سے نہ صرف ملک کے لیے بجلی کی بچٹ ہوگی بلکہ کاشت کاروں کی پیداواری لاگت میں بھی کمی آئے گی۔

یوایس ایڈ کاشت کاروں کی جانب سے پرانے پمپوں کو بدلنے پر اٹھنے والی لاگت کا پچاس فیصد بطور زراعانت دے گا۔ یہ پمپ ممتاز پاکستانی صنعت کار بنارہے ہیں اور وہ ان کی تنصیب اور بعد از فروخت مرمت کے لیے بھی خدمات فراہم کریں گے۔

XS
SM
MD
LG