رسائی کے لنکس

بجلی منقطع کرنے پر فوجی افسر نے لائن مین کو 'قتل' کر دیا


فائل فوٹو

فائل فوٹو

مبینہ طور پر میجر زاہد نے پستول سے فائرنگ کر کے محبوب کو قتل کر دیا اور اپنے ایک رشتے دار کے ساتھ مل کر لاش کو گوجر خان کے علاقے میں دفن کر دیا۔

پاکستان کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بجلی کے محکمے کے ایک اہلکار کو قتل کرنے کے الزام میں فوج کے ایک افسر اور اس کے معاون کو گرفتار کر لیا گیا۔

پولیس کے مطابق اسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی (آئیسکو) کا نائب لائن مین محبوب احمد بل کی عدم ادائیگی پر بدھ کو ڈیفنس فیز ٹو کے علاقے میں میجر راجہ زاہد کے گھر پہنچا۔

میجر زاہد نے الزام عائد کیا کہ آئیسکو اسے گزشتہ مہینوں میں غلط بل بھیجتی رہی اور ان کا لائن مین سے تلخ جملوں کا تبادلہ بھی ہوا۔

بعد ازاں مبینہ طور پر میجر زاہد نے پستول سے فائرنگ کر کے محبوب کو قتل کر دیا اور اپنے ایک رشتے دار کے ساتھ مل کر لاش کو گوجر خان کے علاقے میں دفن کر دیا۔

اپنے اہلکار کی گمشدگی پر آئیسکو کے لوگوں نے احتجاج کیا اور چھان بین کے بعد میجر زاہد کو فوج کی تحویل میں دے دیا گیا جب کہ ان واقعے میں ملوث دوسرے شخص کے خلاف پولیس نے مقدمہ درج کر لیا۔

ادھر وفاقی وزیر برائے پانی و بجلی خواجہ محمد آصف نے آئیسکو کے ملازم کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے واقعے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ انھوں نے فرائض منصبی کی انجام دہی کے دوران ہلاک ہونے والے ملازم کے لواحقین کے لیے تیس لاکھ روپے معاونت کا اعلان کیا ہے۔

XS
SM
MD
LG