رسائی کے لنکس

پاکستانی فوج کے نئے سربراہ کے لیے بھی دہشت گردی کا خاتمہ سب سے بڑا چیلنج ہو گا۔

پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے پیر کو وزیراعظم نواز شریف اور صدر ممنون حسین سے الگ الگ ملاقات کی۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری ایک بیان کے مطابق ملاقات میں پیشہ وارانہ اُمور اور قومی سلامتی سے متعلق معاملات زیر غور آئے۔

جنرل قمر باجوہ نے 29 نومبر کو فوج کی کمان سنبھالی تھی۔

صدر ممنون حسین نے جنرل باجوہ سے ملاقات میں کہا کہ دہشت گردی کے خاتمے کے لیے حتمی اہداف کے حصول تک آپریشن ضرب عضب جاری رہنا چاہیئے۔

ملاقات میں انسداد دہشت گردی کے قومی لائحہ عمل پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

پاکستان کو گزشتہ ایک دہائی سے زائد عرصے سے بدترین دہشت گردی کا سامنا رہا ہے اور کے خاتمے کے لیے جنرل قمر جاوید باجوہ کے پیش رو جنرل راحیل شریف نے ’ضرب عضب‘ کے نام سے ایک بھرپور آپریشن شروع کیا، جس کے بعد ملک میں دہشت گردی کے واقعات میں نمایاں کمی دیکھی گئی۔

تاہم پاکستانی فوج کے نئے سربراہ کے لیے بھی دہشت گردی کا خاتمہ سب سے بڑا چیلنج ہو گا۔

XS
SM
MD
LG