رسائی کے لنکس

آئند ہفتے سے انتخابی فہرستوں میں ناموں کی تصدیق کے لیے ملک گیر مہم کا آغاز


آئند ہفتے سے انتخابی فہرستوں میں ناموں کی تصدیق کے لیے ملک گیر مہم کا آغاز

آئند ہفتے سے انتخابی فہرستوں میں ناموں کی تصدیق کے لیے ملک گیر مہم کا آغاز

سیکرٹری الیکشن کمیشن آف پاکستان اشتیاق احمد خان نے ہفتہ کو نیوز کانفرنس سے خطاب میں کہا ہے کہ شفاف اور غلطیوں سے پاک انتخابی فہرستوں کی تیاری کے لیے آٹھ کروڑ دس لاکھ اہل ووٹروں کے ناموں اور دیگر کوائف کی جانچ پڑتال کے لیے 22 اگست سے ملک گیر مہم شروع کی جارہی ہے ۔ اس مہم کے تحت تقریباً د و لاکھ سرکاری ملازمین گھر گھر جاکر کمپیوٹرائزڈ انتخابی فہرستوں میں درج ناموں کی تصدیق کریں گے اور یہ عمل 30 ستمبر تک مکمل کیا جائے گا۔

اشتیاق احمد خان نے کہا کہ گھر گھرجا کر ووٹروں کی تصدیق کے بعد حتمی فہرستیں ہر ضلع میں آویزاں کی جائیں گی اور اگر کسی کو اعتراض ہوگا تووہ الیکشن کمیشن میں اپنی شکایایت درج کرا سکے گا ۔اُنھوں نے بتایا کہ حتمی کمپیوٹرائزڈ انتخابی فہرستوں کی تیاری کا عمل مارچ 2012ء میں مکمل ہوگا۔

اشتیاق احمد خان

اشتیاق احمد خان



سیکرٹری الیکشن کمیشن نے بتایا کہ انتخابی عمل کو قابل اعتماد بنانے کے لیے کئی دیگر اقدامات بھی کئے گئے ہیں جس کے تحت عام انتخابات کے دوران ہر پولنگ اسٹیشن پر موجود نگران عملے کو فراہم کی جانے والی نئی انتخابی فہرستوں پر ووٹر کی تصویر بھی موجود ہوگی جس سے جعلی ووٹ ڈالنا ممکن نہیں رہے گا۔ ”اس کانتیجہ یہ نکلے گا کہ ملک میں صاف شفاف انتخابات کا خواب جو ہے وہ پورا ہو جائے گا، اس سے جمہوریت مستحکم ہو گی اور اس کو جس طرح ہم دیکھ رہے ہیں کہ اس کا آئندہ اثر پورے نظام پر پڑے گا اور اچھی طرز حکمرانی پر اس کا بہت خوشگوار اثر مرتب ہوگا۔“

الیکشن کمیشن نے حال ہی میں موجودہ انتخابی فہرستوں میں درج تین کروڑ 70 لاکھ ایسے ووٹ جن کی تصدیق نہیں ہو سکی تھی لسٹوں سے نکال دیا تھا۔ الیکشن کمیشن نے یہ اقدام عدالت عظمیٰ کے حکم کے بعد کیا تھا کیوں کہ تحریک انصاف کے سربراہ عمرا ن نے سپریم کورٹ میں ایک درخواست دائر کر رکھی تھی جس میں یہ استدا کی گئی تھی کہ عدالت الیکشن کمیشن کو ہدایت کرے کہ وہ انتخابی فہرستوں میں درج جعلی ووٹروں کو خارج کر کے نئی انتخابی فہرستیں تیارکرے۔


سیکرٹری الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ غیر مصدقہ ووٹوں کے انتخابی فہرستوں سے اخراج کے بعد کوائف کا انداج کرنے کے قومی ادارے ’نادرا‘سے تصدیق شدہ تین کروڑ 60 لاکھ سے زائد نئے ووٹوں کو انتخابی فہرستوں میں شامل کیا گیا ہے جس کے بعد اب کل اہل ووٹروں کی تعداد آٹھ کروڑ دس لاکھ ہو گئی ہے۔

پاکستان میں سیاسی جماعتیں اور انتخابی عمل کی نگرانی کرنے والی غیر سرکاری تنظیموں کا بھی مطالبہ رہا ہے کہ قابل اعتماد انتخابات کے لیے غلطی سے پاک انتخابی فہرستیں ناگزیر ہیں ۔

XS
SM
MD
LG