رسائی کے لنکس

سیلاب زدگان کے لیے جنرل الیکٹرک کا عطیہ


سیلاب زدگان کے لیے جنرل الیکٹرک کا عطیہ

سیلاب زدگان کے لیے جنرل الیکٹرک کا عطیہ

پاکستان میں سیلاب سے متاثرہ افراد کی بحالی کے لیے معروف امریکی کمپنی جنرل الیکٹرک یا جی۔ای نے ورلڈ فوڈ پروگرام کے ذریعے 10 لاکھ ڈالر کا عطیہ دیا ہے۔ کمپنی کے عہدے داروں نے یہ رقم واشنگٹن میں پاکستانی سفارت خانے کو دی جسے خوراک کے عالمی ادارے کی نگرانی میں متاثرہ افراد کی امداد کے لیے استعمال کیا جائے گا۔

پاکستان میں تاریخ کے بدترین سیلاب سے متاثرہ افراد کی بحالی کے لیے دی جانے والی دس لاکھ ڈالر کی اس رقم کے علاوہ جنرل الیکٹرک اور اس کے ملازمین پہلے ہی تین لاکھ 75 ہزار ڈالر امدادی کاموں کے لیے دے چکے ہیں۔

واشنگٹن کے پاکستانی سفارت خانے میں اس سلسلے میں ہونے والی ایک تقریب میں کمپنی کے سی ای او نے کہا کہ مجھے فخر ہے کہ ہماری کمپنی مدد کے لیے آگے بڑھی، اور میں چاہوں گا کہ دوسری کمپنیاں بھی امدادی کاموں میں حصہ لینے کے لیےآگے آئیں اور متاثرہ افراد کی زندگیاں بچائیں۔

امریکہ میں پاکستانی سفیر حسین حقانی نے کہا کہ اب تک دنیا بھر سے مختلف تنظیموں اور حکومتی اداروں کی جانب سے چھ ارب ڈالر کی مدد کے وعدے ہوچکے ہیں ، لیکن مزید مدد کی اشد ضرورت ہے۔

افغانستان اور پاکستان کے لیے امریکی وزارت خارجہ کے خصوصی نمائندے ڈین فیلدمین نے کہا کہ انھیں توقع ہے کہ کاروباری ادارے اس سلسلے میں مزیدمدد فراہم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت تک کارپوریٹ سیکٹر سے 50 مختلف تنظیمیں تقریبا ایک کروڑ ڈالر فراہم کرچکی ہیں، لیکن جنرل الیکٹرک کی امداد ان سب میں زیادہ ہے۔

ورلڈ فوڈ پروگرام کے صدر رچرڈ لیچ نے کہا کہ یہ ایک ایسی تباہی ہے جس کے اثرات آنے والے کئی برسوں تک محسوس کیے جائیں گے اور فصلوں کی بڑے پیمانے پر تباہی سے خوراک کی شدید کمی ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ورلڈ فوڈ پروگرام وہ تمام کوششیں کرے گا جو وہ کرسکتا ہے ۔ ہم آج 35 لاکھ افراد کو خوارک فراہم کر رہے ہیں اور اس ماہ کت آخر تک ہم 60 لاکھ لوگوں تک پہنچنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

امریکہ میں پاکستانی سفیر حسین حقانی نے کہا کہ تعمیر نو کے لیے طویل میعاد منصوبے بنائے جارہے ہیں ، جن کی تکمیل کے لیے عالمی برداری کی امداد کی ضرورت ہوگی۔

XS
SM
MD
LG