رسائی کے لنکس

سپریم کورٹ کے سابق جج بھگوان داس انتقال کر گئے


وہ پاکستان کی عدالت عظمیٰ کے قائم مقام چیف جسٹس کے طور پر بھی فرائض انجام دے چکے تھے اور اس عہدے پر براجمان ہونے والی وہ پاکستان کی پہلی ہندو شخصیت تھے۔

پاکستان کی عدالت عظمیٰ کے سابق سینیئر ترین جج رانا بھگوان داس پیر کو انتقال کر گئے۔

وہ کچھ عرصے سے عارضہ قلب میں مبتلا تھے اور کراچی کے ایک نجی اسپتال میں زیر علاج تھے۔ ان کی عمر 73 سال تھی۔

وہ 2005ء سے 2007ء تک مختلف اوقات میں پاکستان کی عدالت عظمیٰ کے قائم مقام چیف جسٹس کے طور پر بھی فرائض انجام دے چکے تھے اور اس عہدے پر براجمان ہونے والی وہ پاکستان کی پہلی ہندو شخصیت تھے۔

اس عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد وہ 2009ء سے 2012ء تک فیڈرل پبلک سروس کمیشن آف پاکستان کے چیئرمین کے طور پر بھی فرائض انجام دیتے رہے۔

رانا بھگوان داس 1942ء میں سندھ علاقے لاڑکانہ میں پیدا ہوئے۔ انھوں نے قانون کی ڈگری کے علاوہ اسلامیات میں بھی اعلیٰ ڈگری حاصل کر رکھی تھی۔

انھوں نے بطور وکیل اپنی پیشہ وارانہ زندگی شروع کی اور 1967ء میں عدلیہ میں بطور جج شامل ہوئے۔

1994ء میں انھیں سندھ ہائی کورٹ کا جج مقرر کیا گیا۔ بعد ازاں سپریم کورٹ میں جج بنائے گئے جہاں وہ 2009ء تک اپنی مدت ملازمت پوری ہونے تک تعینات رہے۔

XS
SM
MD
LG