رسائی کے لنکس

وفاقی وزیر کے بقول اس نظام صلوۃ پر سب ہی مسالک کے اکابرین نے اتفاق کیا ہے لیکن ملک میں شیعہ مسلک سے تعلق رکھنے والوں کی ایک بڑی تنظیم مجلس وحدت المسلمین کے رہنما علامہ ناصر عباس کے خیالات اس سے مختلف ہیں۔

مذہبی رواداری کو فروغ دینے کے لیے حکومت کی طرف سے ایک اور کوشش سامنے آئی ہے جس میں ابتدائی طور پر وفاقی دارالحکومت میں تمام مسالک کی مساجد میں اذان اور نماز کا ایک ہی وقت متعین کیا گیا ہے۔

اس سلسلے میں گزشتہ ماہ وفاقی وزارت مذہبی امور کے زیر اہتمام شیعہ، بریلوی، دیو بندی اور اہل حدیث کے اکابرین نے باہمی مشاورت اور اتفاق سے یکساں نظام صلوۃ وضع کرنے کا فیصلہ کیا اور بعد ازاں اس سلسلے میں ایک کیلنڈر ترتیب دینے کا کام شروع کیا گیا۔

اسلام آباد میں فیصل مسجد میں نماز جمعہ سے قبل اس نظام صلوۃ کا اعلان کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے مذہبی امور سردار محمد یوسف کا کہنا تھا کہ اس وقت مسلمانوں کو باہمی اتفاق و ہم آہنگی کی اشد ضرورت ہے اور اذان و نماز کے یکساں اوقات سے مختلف مسالک کے مابین تفرقے کو ختم کرنے میں مدد ملے گی۔

"آئینی طور پر حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ عوام کو ایسی سہولتیں پہنچائے جس سے ہم انفرادی اور اجتماعی طور پر اپنی زندگیوں کو اسلام کے بنیادی تصورات اور اصولوں کے مطابق ترتیب دے سکیں۔"

گوکہ وفاقی وزیر کے بقول اس نظام صلوۃ پر سب ہی مسالک کے اکابرین نے اتفاق کیا ہے لیکن ملک میں شیعہ مسلک سے تعلق رکھنے والوں کی ایک بڑی تنظیم مجلس وحدت المسلمین کے رہنما علامہ ناصر عباس کے خیالات اس سے مختلف ہیں۔

وائس آف امریکہ سے گفتگو میں ان کا کہنا تھا کہ "یہ صحیح نہیں ہے۔ شریعت نے جو اوقات متعین کیے ہیں ان میں مداخلت نہیں کرنی چاہیے، تمام مسالک کے اوقات نماز تھوڑے مختلف ہیں تو آپ ان معاملات میں کیوں مداخلت کرتے ہیں۔ فقہا کے فتاویٰ کے مطابق ہر کوئی اپنی نماز اپنی عبادت انجام دیتا ہے۔"

ملک میں ایک عرصے سے فرقہ وارانہ کشیدگی کے باعث ناخوشگوار واقعات پیش آتے رہے ہیں اور سرکار یہ کہتی رہی ہے کہ وہ اپنے طور پر مختلف مسالک کے مابین ہم آہنگی پیدا کرنے کی کوشش تو کر رہی ہے لیکن اس میں ان مسالک کو بھی اپنے تفرقات ختم کرنے کی ٹھوس کوشش کرنا ہوگی۔

دریں اثناء گزشتہ ہفتے پاکستان پہنچنے والے امام کعبہ شیخ خالد الغامدی نے اپنا دورہ مکمل کر لیا ہے اور اختتامی موقع پر انھوں نے فیصل مسجد اسلام آباد میں نماز جمعہ کی امامت کروائی۔

اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ اسلام اتحاد، ہم آہنگی، محبت اور بھائی چارے کا درس دیاتا ہے۔ انھوں نے مسلمانوں پر مشکل وقت میں ایک دوسرے کی مدد کرنے پر زور دیا۔

XS
SM
MD
LG