رسائی کے لنکس

کشمیریوں کی تحریک میں نئی جہد آئی ہے، شاہ محمود قریشی


وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی ۔ فائل فوٹو

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی ۔ فائل فوٹو

پاکستان نے بھارت کے زیرانتظام کشمیر کی موجودہ صورت حال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مقامی کشمیریوں کی تحریک میں ایک نئی جہد اور تیزی آئی ہے۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کشمیر ی عوام حق خود ارادیت کے اپنے مطالبے پر متفق ہیں۔

اُنھوں نے کہا کہ کشمیریوں کے جذبات اور اُن کے ارادے کی جھلک نوجوانوں، خواتین اور سول سوسائٹی کے تمام شعبوں کے پرامن مظاہروں سے ظاہر ہوتی ہے۔

بیان میں مظاہرین کے خلاف بھارتی سکیورٹی فورسز کی طرف سے طاقت کے استعمال کی شدید مذمت کی گئی جب کہ یہ بھی کہا گیا کہ معصوم شہریوں کی ہلاکت اور کشمیری رہنماؤں کی حراست اور نظربندی پاکستان کے لیے ناقابل قبول ہے۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے بیان میں یہ مطالبہ کیا ہے کہ بھارتی حکومت کشمیر میں ضبط کا مظاہرہ کرے۔

اُنھوں نے کہا کہ پاکستان کشمیری عوام کے موقف کی حمایت جاری رکھے گا اور بین الاقوامی برادری پر بھی زور دیا کہ وہ کشمیریوں کے بنیادی حقوق کے تحفظ کے لیے اقدامات کرے۔

بیان میں کہا گیا کہ پاکستان مسئلہ کشمیرکا حل کشمیریوں کی اُمنگوں اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق چاہتا ہے۔ پاکستان نے بھارت سے مذاکرات کے عمل کی جلد اور مکمل بحالی کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

وزیرخارجہ قریشی نے کہا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ مسئلہ کشمیر سمیت تمام معاملات پر تعمیری اور نتیجہ خیز مذاکرات چاہتا ہے۔

دریں اثناء بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں کرفیوکے باوجود حکومت مخالف مظاہروں کا سلسلہ جمعہ کے روز بھی جاری رہا اور تازہ جھڑپوں میں مزید دو افراد ہلاک ہو گئے ہیں، کشمیر کے اس حصے میں کرفیو کا یہ مسلسل کا پانچواں دن تھا۔

اطلاعات کے مطابق امن وامان برقرار رکھنے کے لیے نئی حکمت عملی کے تحت فوج نے مختلف دیہاتوں اور قصبوں میں گشت کیا۔

بھارتی کشمیر میں اتوار سے شروع ہونے والے مظاہروں کے نئے سلسلے میں، مظاہرین نے سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے کے علاوہ حفاظتی دستوں پر پتھراؤ بھی کیا ۔ سکیورٹی فورسز کی طرف سے مظاہرین پر گولی چلانے کی واقعات میں اس ہفتے کم ازکم 23 افراد ہلاک ہو ئے ہیں۔ جب کہ کشمیر کے اس حصے میں گذشتہ تین ماہ کے دوران فائرنگ اور تشدد کے واقعات میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 95 ہو چکی ہے اور اس دوران چالیس افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

XS
SM
MD
LG