رسائی کے لنکس

مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے اقوام عالم سے اقدامات کا مطالبہ


پاکستان کے وزیر برائے امور کشمیر نے امریکہ سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ کشمیر کے پرامن حل کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔

پاکستان کے وفاقی وزیر برائے امور کشمیر برجیس طاہر نے حکومت کے اس موقف کو دہرایا ہے کہ امریکہ تنازع کشمیر کے حل کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔

اتوار کو ایک بیان میں انھوں نے بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں سکیورٹی فورسز کی طرف سے انسانی حقوق کی مبینہ خلاف ورزیوں کا نوٹس نہ لینے پر انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیموں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اس مسئلے کے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت فوری حل کے لیے اقدامات کیے جائیں۔

اتوار کو اسلام آباد سمیت ملک کے مخلتف شہروں خصوصاً پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں کشمیریوں نے یوم سیاہ منایا۔ یہ لوگ ہر سال 27 اکتوبر کو 66 سال قبل بھارتی افواج کی طرف سے کشمیر کے دوسرے حصے کا کنٹرول سنبھالنے کے خلاف یہ دن مناتے ہیں۔

اس سلسلے میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے وزیراعظم چودھری عبدالمجید نے تنازع کشمیر کو کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل کرنے کے لیےکوششیں جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔

’’اس طرف اور اُس طرف (بھارتی کشمیر) ہم ایک ہیں اور ایک رہیں گے۔۔۔آج اس بات کا عزم کررہے ہیں کہ ہمارا تسلسل آزادی اور جدوجہد کا جاری رہے گا۔‘‘

یہ دن ایک ایسے وقت منایا جارہا ہے جب پاکستان اور بھارت کے درمیان حالیہ مہینوں میں کشمیر کو منقسم کرنے والی لائن آف کنٹرول پر دونوں ملکوں کی طرف سے ایک دوسرے پر فائربندی کی خلاف ورزی کے الزامات کے باعث تعلقات میں کشیدگی پائی جاتی ہے۔

پاکستان اس مسئلہ کشمیر کو بھارت کے ساتھ تعلقات میں کشیدگی کی ایک بڑی وجہ قرار دیتا ہے اور اس کا کہنا ہے کہ اس تنازع کے حل کے لیے اقوام عالم اپنا کردار ادا کریں کیونکہ یہ نہ صرف خطے بلکہ دنیا کے امن کے لیے بھی ضروری ہے۔

بھارت یہ کہہ چکا ہے وہ پاکستان کے ساتھ تمام تنازعات بات چیت کے ذریعے حل تلاش کرنے پر آمادہ ہے لیکن کشمیر کے معاملے کو وہ دو ملکوں کا آپسی تنازع قرار دیتے ہوئے اس میں کسی تیسرے ملک کی مداخلت تسلیم کرنے سے انکار کرچکا ہے۔

ادھر مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے پاکستان اور بھارت کے درمیان تمام تصفیہ طلب معاملات کے مذاکراتی حل کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کی پیش کش کی ہے۔
XS
SM
MD
LG