رسائی کے لنکس

خیبر پختونخواہ: محکمہ تعلیم کے دفاتر میں بائیومیٹرک نظام متعارف


فائل فوٹو

فائل فوٹو

اس سے قبل صوبے میں ڈاکٹروں اور دیگر ملازمین کی حاضری کو یقینی بنانے کے لیے بھی محکمہ صحت میں یہ نظام متعارف کرایا جا چکا ہے۔

خیبر پختونخوا کے محکمہ ابتدائی و ثانوی تعلیم نے عملے کی حاضری کو یقینی بنانے کے لیے صوبے میں اپنے دفاتر میں بائیومیٹرک نظام متعارف کروایا ہے۔ اس نظام کے تحت اب محکمہ تعلیم کے ملازمین کو انگلیوں کے نشان پڑھنے والی مشین کے ذریعے اپنی حاضری کا اندراج کرنا ہو گا، جو خود بخود حاضری کے وقت کا تعین کر لے گی۔

خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے میں تعلیمی معیار میں بہتری لانے کے لیے متعدد اقدامات کیے ہیں، مگر ایک بڑا مسئلہ اساتذہ اور عملے کی حاضری کو یقینی بنانا ہے۔ اس سے قبل صوبے میں ڈاکٹروں اور دیگر ملازمین کی حاضری کو یقینی بنانے کے لیے بھی محکمہ صحت میں یہ نظام متعارف کرایا جا چکا ہے۔

محکمہ تعلیم میں اس تازہ تبدیلی کا اعلان ملک کے اخبارات میں خیبر پختونخوا کی حکومت کی جانت سے شائع ہونے والے اشتہار میں کیا گیا، جس کے مطابق سیاہی سے انگوٹھا لگانے کے پرانے نظام کی بجائے اب بائیومیٹرک نظام کے تحت ابتدائی اور ثانوی تعلیمی دفاتر میں حاضری کا اندراج کیا جائے گا۔

مارچ میں اس منصوبے کا افتتاح کرتے ہوئے صوبائی وزیر محمد عاطف خان نے کہا تھا کہ پہلے مرحلے میں اس نظام کو صوبے کے محکمہ ابتدائی و ثانوی تعلیم کے دفاتر میں متعارف کرایا جائے گا، دوسرے مرحلے میں تعلیمی اداروں میں متعارف کرایا جائے گا، جبکہ تیسرے مرحلے میں صوبے کے باقی تمام سکولوں میں یہ نظام لایا جائے گا۔

انہوں نے یہ بھی کہا تھا اس سے اساتذہ اور دیگر عملے کی وقت پر حاضری اور نظم و نسق میں بہتری کو یقینی بنایا جا سکے گا۔

XS
SM
MD
LG