رسائی کے لنکس

کشمیر: لائن آف کنٹرول پر فائرنگ کا تبادلہ


(فائل فوٹو)

(فائل فوٹو)

کشمیر کو دو حصوں میں تقسیم کرنے والی حد بندی لائن پر دونوں جانب سے ایک دوسرے پر فائرنگ میں پہل کا الزام لگایا جاتا رہا ہے۔

پاکستانی عسکری عہدیداروں نے دعویٰ کیا ہے کہ کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر گزشتہ اتوار کی شب بھارتی فوج نے ہلکے ہتھیاروں اور مارٹر گولوں سے پاکستانی فوجی چوکیوں کو نشانہ بنایا تاہم اس میں کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔

تاہم بھارتی ذرائع ابلاغ نے بھارت کے سکیورٹی عہدیداروں کے حوالے سے کہا ہے کہ لائن آف کنٹرول پر فائر بندی کی خلاف ورزی پاکستان کی جانب سے کی گئی۔

پاکستانی فوجی عسکری عہدیداروں نے پیر کو دعویٰ کیا کہ بھارتی فورسز نے لائن آف کنٹرول پر بٹل سیکڑ پر پاکستان فوجی چوکیاں پر ہلکے ہتھیاروں سے فائرنگ کی اور مارٹر گولے پھینکے، جس کا موثر جواب دیا گیا۔

اس سے قبل ہفتہ پاکستانی فوج کے مطابق بٹل میں سیکٹر میں بھارتی سرحدی فورسز کی 'بلااشتعال فائرنگ' پر بھارت سے احتجاج بھی کیا ہے۔

پاکستانی سکیورٹی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ گزشتہ دو روز کے دوران لائن آف کنڑول کے بٹل سیکٹر میں فائرنگ کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔

گزشتہ تین ہفتوں کے دوران کشمیر میں لائن آف کنڑول پر فائر بندی کی متعدد بار خلاف ورزی کے واقعات سامنے آئے جس میں دونوں جانب سے ایک دوسرے پر فائرنگ میں پہل کا الزام لگایا گیا۔

2003ء میں بھارت اور پاکستان کے درمیان کشمیر کے متنازع علاقے کو تقسیم کرنے والی لائن آف کنٹرول پر فائرنگ کے واقعات کی روک تھام کے لیے فائر بندی کا معاہدہ طے پایا تھا جس پر بیشتر وقت دونوں جانب سے عمل درآمد کیا جاتا رہا ہے۔

گزشتہ سال فائر بندی کے معاہدے کی خلاف ورزی کے کئی واقعات کے بعد دوطرفہ تعلقات تناؤ کا شکار ہو گئے تھے۔

تاہم بعد میں اعلٰی سطحی عسکری و سفارتی روابط کے بعد اس تناؤ میں کمی آئی اور فائر بندی کے معاہدے پر عمل درآمد کو موثر بنانے پر بھی اتفاق کیا گیا۔
XS
SM
MD
LG