رسائی کے لنکس

شدت پسنددوبارہ منظم ہو رہے ہیں، افتخار حسین

  • شمیم شاہد

صوبائی وزیر اطلاعات میاں افتخار حسین

صوبائی وزیر اطلاعات میاں افتخار حسین

صوبائی وزیر اطلاعات میاں افتخار حسین نے انکشا ف کیا ہے کہ اورکزئی اور جنوبی وزیرستان کے قبائلی علاقوں میں فوجی آپریشن سے فرار ہونے والے طالبان شدت پسنددوبارہ منظم اور خبیر پختون خواہ کے علاقوں میں دہشت گردی کی کارروائیاں کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔

پشاور میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے دعویٰ کیا کہ حکومت ان عناصر کے عزائم سے باخبر ہے اور ضرورت پڑنے پر پشاور اور دوسرے اضلاع میں اُن کے خلاف ایک بھرپور کارروائی کی جائے گی۔

صوبائی وزیر اطلاعات نے لوگو ں سے بھی اس موقع پر اپیل کی کہ وہ اپنے علاقوں میں مشکوک افراد سے ہوشیار رہیں ۔ انھوں نے کہا کہ صوبے کو دہشت گرد عناصر سے اُس وقت تک خطرہ رہے گا جب تک قبائلی علاقوں میں اُن کے ٹھکانوں کا صفایا نہیں کردیا جاتا۔

افتخار حسین نے دعویٰ کیا کہ حکومت کی پالیسیوں اور سکیورٹی کی موٴثر کارروائیوں کی بدولت خیبر پختون خواہ میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں نمایا ں کمی آچکی ہے۔

وزیرستان، مہمند اور اورکزئی ایجنسیوں میں حالیہ دنوں میں سکیورٹی فورسز کے خلاف طالبان کے حملوں نے اس تاثر کو تقویت دی ہے کہ عسکریت پسند دوبارہ منظم ہو رہے ہیں ۔ طالبان کے حملوں میں تیزی اُن سرکاری اعلانات کے بعد آئی ہے جن میں اورکزئی اور جنوبی وزیرستان میں طالبان شدت پسندوں کے ٹھکانوں کا صفایا اور اکثر جنگجوؤں کو ہلاک کرنے کے دعوے کیے گئے تھے۔

XS
SM
MD
LG