رسائی کے لنکس

”اسرائیل سے بین الاقوامی کارکنوں کی رہائی کے لیے امریکی کردار کا مطالبہ“

  • حسن سید

اسلام آباد میں فلسطینی سفیر نیوزکانفرنس سے خطاب کررہے ہیں

اسلام آباد میں فلسطینی سفیر نیوزکانفرنس سے خطاب کررہے ہیں

پاکستان میں فلسطینی سفیر ہیزم حسین ابوشناب نے امریکہ پر زور دیا ہے کہ وہ اسرائیل کی تحویل میں موجود فلسطینی عوام کے لیے امداد لے کر جانے والے سینکڑوں غیر ملکی کارکنوں کی رہائی کے لیے اپنا اثرورسوخ استعمال کرے۔

منگل کے روز اسلام آباد میں نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ اس ضمن میں امریکہ بہت مثبت اور اہم کردار کرسکتا ہے کیونکہ ان کے بقول امریکہ ہی وہ ملک ہے جو اسرائیلی انتظامیہ کے ساتھ اپنے اچھے تعلقات کی بنیاد پر اسرائیل پر دباؤ ڈال سکتا ہے اور اسے قائل کرسکتا ہے۔

غزہ میں فلسطینی عوام کے لیے امداد لے کر جانے والے بحری قافلے فریڈم فلوٹیلاپر اسرائیل نے پیر کی صبح حملہ کیا تھا جس میں کم ازکم دس افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے تھے جب کہ تقریباً 650افراد اسرائیل کی تحویل میں جن میں سینئرصحافی طلعت حسین سمیت تین پاکستانی بھی شامل ہیں۔ پاکستان جس نے کبھی بھی اسرائیلی ریاست کو تسلیم نہیں کیا اس واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپنے شہریوں کی محفوظ اور جلد رہائی کے لیے تمام ممکن اقدامات کررہا ہے۔جب کہ فلسطینی سفیر کا بھی کہنا تھا کہ ان کی ریاست تینوں پاکستانیوں کی رہائی کے لیے تمام سفارتی ذرائع بروئے کار لارہی ہے۔

اس واقعے پر اقوام متحدہ کے ردعمل کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پرابوشناب کا کہنا تھا کہ اب تک کے ردعمل کو وہ بہت کم حد تک تسلی بخش قراردیتے ہیں اور اس بات کا مطالبہ کرتے ہیں کہ عالمی برادری ایک پرزور قرارداد منظور کرتے ہوئے اس بات کو یقینی بنائے کہ اسرائیل فریڈم فلوٹیلا پر حملے کے تناظر میں بین الاقوامی قوانین کی سختی سے پابندکرے۔

فلسطینی عوام کے لیے جانے والے امدادی قافلے پر حملے کے بعد اسرائیل کو دنیا بھر سے بھی کڑی تنقید کا سامنا ہے جب کہ امریکہ نے بھی واقعے میں ہونے والے جانی نقصان پر گہرے افسوس کا اظہار کیا ہے۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے اپنے اجلاس میں اسرائیلی حملے کی شفاف اور غیر جانبدارانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ اسرائیل کے مطابق بحری قافلے میں شامل کارکنوں نے کشتیوں میں داخل ہونے والے اسرائیلیوں پر خنجروں اور ڈنڈوں سے حملہ کیا تھا اور ایک کمانڈو سے ہتھیار چھینا۔

XS
SM
MD
LG