رسائی کے لنکس

نواز شریف دولتِ مشترکہ کے کولمبو میں سربراہ اجلاس میں شرکت کے علاوہ سری لنکا کے صدر اور دیگر عالمی رہنماؤں سے الگ الگ ملاقاتیں بھی کریں گے۔

پاکستان کے وزیرِ اعظم نواز شریف دولتِ مشترکہ کے سربراہ اجلاس میں شرکت کے لیے سری لنکا پہنچ گئے ہیں۔

وزیرِ اعظم نواز شریف جمعرات کی سہ پہر اسلام آباد سے سری لنکا کے شہر کولمبو پہنچے جہاں دولتِ مشترکہ کا اجلاس 15 سے 17 نومبر تک جاری رہے گا۔ اس اجلاس کا موضوع ’’مساوی نمو - مجموعی ترقی‘‘ ہے۔

پاکستان وزارتِ خارجہ کے ترجمان اعزاز احمد چودھری نے سربراہ اجلاس کے ایجنڈے کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ وزیرِ اعظم اپنے ملک کا موقف واضح کریں گے۔

’’جن چار اہم موضوعات پر وزیرِ اعظم اظہار خیال کریں گے ان میں مساوی نمو، 2015ء کے بعد عالمی ترقی، موحولیاتی تبدیلی سے متعلق وسائل کا استعمال اور نوجوانوں کی ترقی شامل ہیں۔‘‘

اعزاز احمد چودھری نے بتایا کہ دولتِ مشترکہ کے سربراہ اجلاس کے موقع پر وزیرِ اعظم پاکستان کی کئی عالمی رہنماؤں سے ملاقاتیں بھی ہوں گی، جن میں سری لنکا کے صدر مہندا راجاپاکسے کے علاوہ آسٹریلیا، مالٹا اور نیوزی لینڈ کے وزرائے اعظم بھی شامل ہیں۔

وزارتِ خارجہ کے مطابق سربراہ اجلاس کے موقع پر کاروباری اور عوامی رابطوں سے متعلق الگ الگ اجلاس بھی ہوں گا۔
جلیل عباس جیلانی

جلیل عباس جیلانی


سربراہ اجلاس سے قبل دولتِ مشترکہ کے رکن ممالک کے وزرائے خارجہ کا اجلاس بھی منعقد ہو چکا ہے جس میں پاکستان کے سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے اپنے ملک کی نمائندگی کی۔

اس اجلاس میں پاکستان نے کامن ویلتھ ریزروو فنڈ تشکیل دینے کی تجویز پیش کی جس کا مقصد سماجی، معاشی اور دیگر مسائل سے دوچار رکن ممالک کو بوقتِ ضرورت مالی معاونت فراہم کرنا ہے۔

مجوزہ فنڈ سے متعلق تفصیلی رپورٹ دولتِ مشترکہ کی سیکریٹرٹ میں جمع کروائی جائے گی، تاہم کسی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔

دولتِ مشترکہ کے آٹھ بانی ارکان میں پاکستان بھی شامل تھا۔
XS
SM
MD
LG