رسائی کے لنکس

پانچ وفاقی وزارتیں صوبوں کو منتقل کرنے کی منظوری


وفاقی کابینہ کا اجلاس (فائل فوٹو)

وفاقی کابینہ کا اجلاس (فائل فوٹو)

کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اختیارات کی منتقلی کے ساتھ ساتھ رواں مالی سال میں ان وفاقی وزارتوں کے لیے مختص رقوم بھی صوبوں کو منتقل کر دی جائیں گی۔

وفاقی کابینہ نے اٹھارویں آئینی ترمیم کے تحت پانچ وفاقی وزارتیں صوبوں کو منتقل کرنے کی منظور ی دے دی ہے۔ بدھ کو اجلاس کے بعد پریس کانفرنس میں سینیٹر رضا ربانی نے بتایا کہ عشر و زکوة، بہبود آبادی، خصوصی اقدامات، اُمور نوجوانان اور بلدیات و دیہی ترقی کی وزراتیں صوبوں کو منتقل کی جارہی ہیں ۔

رضا ربانی نے بتایا کہ ان وزارتوں کے ملازمین میں سے کسی کو نہیں نکالا جائے گا اور صوبوں کی مشاورت سے ان افراد کی مدت ملازمت کو تحفظ دیا جائے گا۔ اُنھوں نے بتایا کہ فروری 2011ء میں پانچ یا اس سے زائد مزید وفاقی وزارتیں صوبوں کو منتقل کر دی جائیں گی ۔

کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اختیارات کی منتقلی کے ساتھ ساتھ رواں مالی سال میں ان وفاقی وزارتوں کے لیے مختص رقوم بھی صوبوں کو منتقل کر دی جائیں گی۔

وفاقی وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ نے اس موقع پر بتایاکہ جن وزارتوں کی منتقلی کی منظور ی دی گئی ہے اُن کے وزراء کے مستقبل کا فیصلہ وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کریں گے۔ واضح رہے کہ لگ بھگ 100 اراکین پر مشتمل وفاقی کابینہ کی موجودگی میں وزیر اعظم گیلانی کی حکومت کو تنقید کا سامنا ہے اور ایسی صورت میں ایک روز قبل دو مزید وزراء کو کابینہ میں شامل کیا گیا۔ لیکن اس کا دفاع کرتے ہوئے قمر زمان کائرہ نے کہا کہ مرکز میں مخلوط حکومت قائم ہے اور پیپلز پارٹی اتحادی جماعتوں کو ساتھ لے کر چلنے کی پالیسی پر کاربند ہے۔

اٹھارویں آئین ترمیم کے تحت 1973 ء کے آئین میں ایک سو سے زائد شقوں میں ترامیم کی منظوری دی گئی تھی جس میں اختیارات کی صوبوں کو منتقلی بھی شامل ہے۔

XS
SM
MD
LG