رسائی کے لنکس

اس مہم کے تحت ملک میں ٹیکس کے نظام کو سمجھنے اور اس کی اہمیت کو اُجاگر کرنے کے لیے آگاہی مہم چلائی جا رہی ہے۔

پاکستان میں اِنکم ٹیکس کلچر کے فروغ اور صارفیں کو ذمہ دار ٹیکس گزار بنانے کے لیے ملک میں صارفین کے حقوق کی غیر سرکاری تنظیم ’دی نیٹ ورک‘ نے ایک مہم شروع کر رکھی ہے۔

تنظیم نے منگل کو ایک بیان میں کہا کہ اس مہم کو چلانے میں اُسے امریکہ کے ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی ’یوایس ایڈ‘ کی معاونت حاصل ہے۔

اس مہم کے تحت ملک میں ٹیکس کے نظام کو سمجھنے اور اس کی اہمیت کو اُجاگر کرنے کے لیے آگاہی مہم چلائی جا رہی ہے۔

دی نیٹ ورک کے بیان میں کہا گیا کہ اس مہم کی کامیابی کے لیے ’’ایسے ٹیکس رضا کاروں اور افراد کی ضرورت ہے جو تحمل سے ایسے لوگوں کے ساتھ کام کر سکیں جو انکم ٹیکس سے اپنے اضلاع کی بہتری کے لیے کام کرنا چاہتے ہیں۔‘‘

بیان میں کہا گیا کہ اس منصوبے سے نا صرف ذمہ دار ٹیکس گزار ہونے کے فوائد کو اجاگر کیا جا رہا ہے بلکہ شہریوں کو انکم ٹیکس جمع کرانے کے طریقہ کار میں پیش آنے والی مشکلات کی بھی نشاندہی کی جا رہی ہے۔

پاکستان میں حال ہی میں فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے عہدیداروں نے بتایا تھا کہ تقریباً 30 لاکھ ایسے افراد کی نشاندہی کی ہے جو شاہانہ زندگی گزارنے کے باوجود اپنی سالانہ آمدن پر کسی قسم کا ٹیکس ادا نہیں کرتے۔

اقتصادی ماہرین کا کہنا ہے کہ پاکستان میں پائیدار اقتصادی ترقی کے لیے ضروری ہے کہ ٹیکس نیٹ کو بڑھایا جائے۔
XS
SM
MD
LG