رسائی کے لنکس

مہمند ایجنسی: بم حملے میں تین افراد ہلاک


فائل فوٹو

فائل فوٹو

مشتبہ شدت پسندوں نے زیر تعمیر ڈیم پر حملہ کیا اور وہاں موجود سامان کو نذر آتش کردیا۔ یہاں سے جاتے ہوئے وہ چار لوگوں کو یرغمال بنا کر اپنے ساتھ لے گئے۔

پاکستان کے قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں بدھ کی صبح شدت پسندوں کی طرف سے کیے گئے بم حملے میں تین افراد ہلاک اور تین زخمی ہو گئے۔

عسکری ذرائع کے مطابق مشتبہ شدت پسندوں نے حلیم زئی کے علاقے میں زیر تعمیر ایک ڈیم پر حملہ کیا اور وہاں موجود سامان کو نذر آتش کر دیا۔

شدت پسند یہاں سے جاتے ہوئے چار لوگوں کو یرغمال بنا کر اپنے ساتھ لے گئے۔ بعد ازاں ڈیم کی تعمیر سے منسلک ایک ٹھیکیدار کی گاڑی کے قریب دیسی ساختہ بم سے دھماکا کیا گیا جس میں تین افراد ہلاک ہوگئے۔

پاکستان کے قبائلی علاقے جنوبی وزیرستان میں واقع گومل زام ڈیم سے بھی گذشتہ سال آٹھ افراد کو شدت پسندوں نے اغوا کر لیا تھا جنھیں رواں ماہ بازیاب کروایا گیا۔

دریں اثناء بنوں کے قریب جانی خیل کے علاقے میں سکیورٹی فورسز کے ایک کیمپ پر شدت پسندوں نے راکٹوں سے حملہ کیا۔

سکیورٹی فورسز نے جوابی کارروائی کرتے ہوئے پانچ مشتبہ حملہ آوروں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ واقعے میں ایک اہلکار زخمی بھی ہوا۔
XS
SM
MD
LG