رسائی کے لنکس

انسداد دہشت گردی کی کوششیں جاری رہیں گی


وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی

وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی

وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے انتہاپسندی اور دہشت گردی کے انسداد کے لیے پاکستان کے عزم کو دوہراتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت امن کے فروغ اورا ستحکام کے لیے تمام تر دستیاب وسائل بروئے کار لائے گی۔

اتوار کو اقوام متحدہ کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں انھوں نے کہا کہ پاکستان عالمی امن کے قیام کی خاطر اپنا کردار انتہائی ذمہ داری سے ادا کر رہا ہے۔

ملک میں سرگرم طالبان جنگجوؤں اور دیگر شدت پسند عناصر کی جانب اشارہ کرتے ہوئے وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان کے مستقبل کو درپیش خطرات کے پیچھے غیر ریاستی کرداروں کا ہاتھ ہے جن کا کوئی مذہب نہیں اور پاکستانی عوام کو دنیا کو یہ باور کرانا ہے کہ اسلام حقیقی معنوں میں امن و سلامتی کا درس دیتا ہے۔

انھوں نے معاشرے میں بدامنی کا سبب بننے والے دیگر مسائل جیسے کے غربت، جہالت، امتیازی سلوک اور نا انصافی کے خاتمے کے لیے حکومت کی کوششیں جاری رکھنی کی یقین دہانی بھی کرائی۔

2001ء میں افغان طالبان کے خلاف جنگ میں امریکا کا اہم اتحادی بننے کے بعد پاکستان میں انتہا پسندی کی ایک نئی لہرکا آغاز ہواجس میں اب تک حکام کے مطابق 30ہزار سے زائد شہری ہلاک ہو چکے ہیں جب کہ شدت پسندوں کے خلاف لڑائی میں سات ہزار سکیورٹی اہلکار بھی ہلاک ہوئے ہیں جو افغانستان میں ہلاک ہونے والے غیر ملکی فوجیوں کی کل تعداد سے زیادہ ہیں ۔

انسداد دہشت گردی میں پاکستان کے کردار کی اہمیت کا اعتراف کرتے ہوئے امریکہ نے پاکستان کے ساتھ دو طرفہ تعاون مضبوط کرنے کے علاوہ ملک کی فوجی صلاحیت بڑھانے میں بھی مدد فراہم کی ہے۔ اس سلسلے میں دونوں ملکوں کے درمیان وسیع البنیاد مذاکرات کا سلسلہ جاری ہے اور واشنگٹن میں ہونے والے اسٹریٹیجک ڈائیلاگ میں امریکہ نے پاکستان کو 2012ء سے 2016ء کے درمیان دو ارب ڈالر کی فوجی امداد دینے کے منصوبے کا اعلان بھی کیا ہے ۔

XS
SM
MD
LG