رسائی کے لنکس

افغان پناہ گزینوں کے قیام کی مدت میں توسیع کا خیر مقدم

  • یاسر منصوری

(فائل فوٹو)

(فائل فوٹو)

پاکستان کی وفاقی کابینہ کے حالیہ فیصلے کے تحت اندراج شدہ افغان پناہ گزینوں کے 2015ء کے اختتام تک ملک میں قیام کو قانونی تحفظ حاصل ہوگا۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزیں ’’یو این ایچ سی آر‘‘ نے افغان پناہ گزینوں کو پاکستان میں مزید قیام کی اجازت دینے کے فیصلے کو سراہا ہے۔

وفاقی کابینہ کے حالیہ اجلاس میں اندراج شدہ افغان پناہ گزینوں کو حکومتِ پاکستان کی طرف سے جاری کردہ شناختی دستاویزات کی مدت میں توسیع کی منظوری دی گئی تھی، جس کے تحت اب اُنھیں 2015ء کے اختتام تک قانونی تحفظ حاصل ہوگا۔

یو این ایچ سی آر کے اسلام آباد میں ترجمان قیصر خان آفریدی نے منگل کو وائس آف امریکہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اُن کا ادارہ اس اقدام کا خیر مقدم کرتا ہے۔

اُنھوں نے بتایا کہ کابینہ کا فیصلہ حکومتِ پاکستان کی اس یقین دہانی کا ثبوت ہے کہ وہ افغان پناہ گزینوں کی مدد اور وطن واپسی سے متعلق حکمتِ عملی پر بھرپور عمل درآمد کرے گی۔

قیصر خان آفریدی کا کہنا تھا کہ اس حکمتِ عملی پر موثر عمل درآمد کی نگرانی کے لیے کابینہ نے ایک کمیٹی بھی تشکیل دی ہے۔

’’نئی حکمتِ عملی میں تمام افغانوں کا اندراج، موثر سرحدی نگرانی، پناہ گزینوں سے متعلق قومی قانون وضع کرنا شامل ہے ... پاکستان نے ابتدائی طور پر ’پروف آف رجسٹریشن کارڈز‘ کی تاریخ تنسیخ اور وطن واپسی سے متعلق معاہدے میں توسیع کی ہے۔‘‘

قیصر خان آفریدی نے توقع ظاہر کی کہ امداد دینے والے ممالک بھی افغان پناہ گزینوں کی بحالی کی کوششوں میں پاکستان کی مدد جاری رکھیں گے۔

’’مئی میں جنیوا میں ہونے والے اجلاس میں بین الاقوامی برادری نے پاکستان میں موجود افغان پناہ گزینوں کی بحالی اور میزبان علاقوں کی امداد کے لیے رقوم فراہم کرنے کی یقین دہانیاں کرائی تھیں۔ ہم امید کرتے ہیں کہ وہ اب انھیں عملی جامہ پہنائیں گے اور پاکستان کے لیے امداد میں مزید اضافہ کریں گے۔‘‘

پاکستان پناہ گزینوں کی میزبانی کرنے والا دنیا کا سب سے بڑا ملک ہے اور سرکاری اعداد و شمار کے مطابق اس وقت ملک میں اندراج شدہ افغان پناہ گزینوں کی تعداد 16 لاکھ سے زائد ہے، جب کہ تقریباً 10 لاکھ مزید افغان غیر قانونی طور پر پاکستان میں مقیم ہیں۔

اقوام متحدہ اور پاکستانی حکام افغان پناہ گزینوں کی میزبانی کرنے والے علاقوں میں جاری منصوبوں کی اہمیت پر بھی زور دیتے آئے ہیں جن کا مقصد مقامی بنیادی ڈھانچے پر پڑنے والے اضافی بوجھ کے اثرات میں کمی ہے۔

پاکستان آئندہ ماہ افغان پناہ گزینوں سے متعلق اہم اجلاس کی میزبانی کا بھی ارادہ رکھتا ہے جس میں وسائل کی دستیابی سے متعلق حکمت عملی کی منظوری متوقع ہے۔
XS
SM
MD
LG