رسائی کے لنکس

امریکی سفارتی دفاتر میں معاملات عامہ کی سرگرمیاں معطل


سفارت خانے کی ترجمان رائین ہیریس نے بتایا کہ عوامی سہولت سے متعلق اُمور صرف منگل کو ہی بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

پاکستان میں گستاخانہ فلم کے خلاف احتجاجی مظاہروں کے تناظر میں امریکہ نے اپنے سفارت خانے اور قونصل خانوں میں منگل کو پبلک ڈیلنگ یا معاملات عامہ کی سرگرمیوں کو معطل رکھا۔

اسلام آباد میں امریکی سفارت خانے کی ترجمان رائین ہیریس نے بتایا کہ عوامی سہولت سے متعلق اُمور صرف منگل کو ہی بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

’’پاکستانی حکومت کی طرف سے اب تک امریکی دفاتر اور عملے کی حفاظت کے لیے کیے گئے انتظامات قابل ستائش ہیں۔‘‘

توہین آمیز فلم کے خلاف ملک کے مختلف شہروں میں چھوٹے بڑے مظاہروں کا سلسلہ تیسرے روز بھی جاری رہا۔

کراچی اور لاہور میں گزشتہ دو روز کے دوران احتجاجی مظاہرین نے امریکی سفارتی دفاتر تک جانے کی کوشش کی تھی لیکن پولیس نے انھیں ایسا نہیں کرنے دیا۔ منگل کو پشاور میں بھی ایک مذہبی تنظیم سے تعلق رکھنے والے مشتعل افراد نے امریکی قونصل خانے کا رخ کرنا چاہا لیکن پولیس نے آنسو گیس کے شیل اور ہوائی فائرنگ کر کے انھیں ایسا کرنے سے باز رکھا۔

ملتان، کراچی اور لاہور سمیت کئی دیگر شہروں میں بھی احتجاجی مظاہرے کیے گئے لیکن ان میں شامل افراد کی تعداد محض چند درجن ہی تھی۔ پاکستانی حکام نے ملک میں امریکی سفارتی دفاتر کے حفاظتی انتظامات کو مزید سخت کر رکھا ہے۔

پاکستان میں گزشتہ تین دنوں کے دوران احتجاجی مظاہروں میں دو افراد ہلاک جب کہ متعدد زخمی ہوئے۔

وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے پیر کی شام پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی کو ملک میں یوٹیوب کو بند کرنے کا حکم دیا تھا تاکہ متنازع فلم تک رسائی کو روکا جا سکے۔
XS
SM
MD
LG