رسائی کے لنکس

دہشت گردی اور تشدد سے متاثرہ علاقوں کی خواتین کے لیے کانفرنس کا انعقاد

  • حسن سید

دہشت گردی اور تشدد سے متاثرہ علاقوں کی خواتین کے لیے کانفرنس کا انعقاد

دہشت گردی اور تشدد سے متاثرہ علاقوں کی خواتین کے لیے کانفرنس کا انعقاد

پارلیمان میں موجود تمام سیاسی جماعتوں پر مشتمل ”خواتین پارلیمانی کاکس“ کی سیکرٹری جنرل اور حکمران پی پی پی کی رکن نفیسہ شاہ نے بتایا ہے کہ 24 مئی سے اسلام آباد میں ہونے والے ایک تین روزہ کنونشن میں انتہاپسندی اور دہشت گردی سے متاثرہ خواتین کی آواز کو بلند کیا جائے گا۔

انھوں نے بتایا کہ” امن، سلامتی اور مصالحت“ کے موضوع پر ہونے والے اس اجتماع میں وفاقی اورصوبائی اسمبلیوں کے علاوہ آزادکشمیر اور گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والی خواتین اور انسانی حقوق کے کارکن بھی شریک ہوں گے جب کہ بھار ت سمیت دیگر سارک ممالک سے بھی خواتین کو اس اجتماع میں مدعو کیا گیا ہے۔

شدت پسندی سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے خیبر پختون خواہ صوبے کی حکمران عوامی نیشنل پارٹی رکن پارلیمنٹ جمیلہ گیلانی کا کہنا ہے کہ خواتین کے تحفظ اور قیام امن کے لیے آواز بلند کرنا ایک مسلسل سیاسی جدوجہد کا حصہ ہے۔ ”عورت ہی وہ ڈھال بن سکتی ہے اور عورت ہی ایک زنجیر بنا سکتی ہے۔ اس دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اور اس کنونشن کے انعقاد سے ہمارا مقصد یہ ہے کہ پورے جنوبی ایشیا کی عورتیں یہاں پر آئیں اور دیکھیں کہ اگر آ ج ہم مصیبت میں ہیں تو کل ان پر یہ مصیبت آنے والی ہے اس لیے وہ امن کے لیے ہمارے ہاتھوں کو مضبوط کریں۔“


نفیسہ شاہ کا کہنا تھا کہ اس کنونشن کا مقصد سول سوسائٹی اورعلاقائی ملکوں کی مشاورت سے ایسی بصیرت تشکیل دینا ہے جس کے تحت عورتوں کو بااختیار بنایا جا سکے اور انھیں درپیش ہر طرح کے خطرات اور مسائل کو دور کیا جا سکے۔

XS
SM
MD
LG