رسائی کے لنکس

نئی انتخابی فہرستوں کی تیاری کی مہم میں ایک ماہ کی توسیع


الیکشن کمیشن نے عدالت عظمیٰ کی ہدایت پر موجودہ انتخابی فہرستوں میں درج تین کروڑ 70 لاکھ ایسے رائے دہندگان کے ناموں کو خارج کردیا تھا جن کے کوائف کی تصدیق نہیں ہو سکی تھی۔

الیکشن کمیشن نے عدالت عظمیٰ کی ہدایت پر موجودہ انتخابی فہرستوں میں درج تین کروڑ 70 لاکھ ایسے رائے دہندگان کے ناموں کو خارج کردیا تھا جن کے کوائف کی تصدیق نہیں ہو سکی تھی۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان کے سیکرٹری اشتیاق احمد خان کا کہنا ہے کہ اراکین پارلیمان اور صوبائی عہدیداروں کی درخواست پر انتخابی فہرستوں کی گھر گھر جا کر تصدیق کے اس عمل میں اب ایک ماہ کی توسیع کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

نئی انتخابی فہرستوں کی تیاری کے لیے آٹھ کروڑ دس لاکھ اہل ووٹروں کے ناموں اور دیگر کوائف کی جانچ پڑتال کی ملک گیر مہم 22 اگست کو شروع کی گئی تھی اور یہ عمل 30 ستمبر کو مکمل ہونا تھا۔

اشتیاق احمد خان نے وائس آف امریکہ سے گفتگو میں اس توسیع کی وجوہات بتاتے ہوئے کہا ’’اس کی تین وجوہات ہیں سیلاب، امن و امان کی خراب صورت حال اور ڈینگی وائرس۔ سیلاب زیادہ تر صوبہ سندھ میں ہے جب کہ بلوچستان، خیبر پختون خواہ اور فاٹا کے کچھ علاقوں میں امن و امان کی خراب صورت کے مسائل ہیں اور تیسرا مسئلہ ڈینگی وائرس کا جو زیادہ تر پنجاب میں ہے اور جو لوگ گھر گھر جا کر انتخابی فہرستوں کی جانچ پڑتال کر رہے ہیں وہ بھی اس (ڈینگی وائرس) سے متاثر ہیں۔‘‘

انتخابی عمل کی نگرانی کرنے والی ایک غیر سرکاری تنظیم فافین کا کہنا ہے کہ ڈیڑھ کروڑ اہل ووٹر ایسے ہیں جن کے نام انتخابی فہرستوں میں موجود ہی نہیں ہیں اس لیے الیکشن کمیشن حتمی فہرستوں کی تیاری سے قبل اس مسئلے پر بھی توجہ دے۔

اشتیاق احمد خان

اشتیاق احمد خان

تاہم الیکشن کمیشن کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ جانچ پڑتال کا عمل مکمل ہونے کے بعد حتمی فہرستیں ہر ضلع میں آویزاں کی جائیں گی اور اگر کسی کا نام اس میں شامل نا ہوا تو وہ الیکشن کمیشن میں اپنی شکایات درج کرا سکے گا۔

الیکشن کمیشن نے حال ہی میں عدالت عظمیٰ کی ہدایت پر موجودہ انتخابی فہرستوں میں درج تین کروڑ 70 لاکھ ایسے رائے دہندگان کے ناموں کو خارج کردیا تھا جن کے کوائف کی تصدیق نہیں ہو سکی تھی۔

سیکرٹری الیکشن کمیشن آف پاکستان کا کہنا ہے کہ انتخابی فہرستوں سے غیر مصدقہ ووٹروں کے ناموں کے اخراج کے بعد کوائف کا انداج کرنے کے قومی ادارے ’نادرا‘ سے تصدیق شدہ تین کروڑ 60 لاکھ سے زائد نئے ووٹروں کا نام انتخابی فہرستوں میں شامل کیا گیا ہے جس کے بعد اب کل اہل ووٹروں کی تعداد آٹھ کروڑ دس لاکھ ہو گئی ہے۔

پاکستان میں سیاسی جماعتیں اور انتخابی عمل کی نگرانی کرنے والی غیر سرکاری تنظیموں کا بھی مطالبہ رہا ہے کہ قابل اعتماد انتخابات کے لیے غلطی سے پاک انتخابی فہرستیں ناگزیر ہیں۔

XS
SM
MD
LG