رسائی کے لنکس

کلاسی فائیڈ مواد افشا کرنے پر، پیٹریاس پر ایک لاکھ ڈالر جرمانہ


فائل

فائل

ڈھائی سال قبل، اُن کی پیشہ وارانہ خدمات اُس وقت تنقید کا نشانہ بنیں جب اُن کی سوانح حیات لکھنے پر مامور ایک خاتون، پولا براڈویل سے متعلق راہ و رسم کا شہرہ ہوا

امریکی سینٹرل انٹیلی جنس ایجنسی کے سابق سربراہ، ڈیوڈ پیٹریاس کو جمعرات کے روز 100000 ڈالر جرمانہ عائد کیا گیا، اور دو سال ’پروبیشن‘ کی سزا سنائی گئی ہے۔

عدالت نے اُنھیں صیغہٴراز سے متعلق معلومات اپنی ’مسٹریس‘ کو دینے کا الزام ثابت ہوا، جو اُن کی سوانح حیات پر کام کرنے پر مامور تھیں۔

ایک وقت تھا جب 62 برس کے پیٹریاس عراق اور افغانستان کی جنگوں میں امریکہ کے جنرل کی حیثیت سے شہرت رکھتے تھے، جنھیں بعدازاں صدر براک اوباما نے سی آئی اے کا سربراہ مقرر کیا تھا۔ اُنھوں نے ملک کے انٹیلی جنس ادارے کو ایک سال تک چلایا، اور 2012ء کے اواخر میں مستعفی ہوگئے۔

ڈھائی سال قبل، اُن کی پیشہ وارانہ خدمات اُس وقت تنقید کا نشانہ بنیں جب اُن کی سوانح حیات لکھنے پر مامور ایک خاتون، پولا براڈویل سے متعلق راہ و رسم کا شہرہ ہوا۔ یہ کتاب تین برس قبل شائع ہوئی، جس کے بعد محبت کے معاملے کا انکشاف ہوا۔

دو ماہ قبل، پیٹریاس نے’کلاسی فائیڈ مواد‘ کو غیرقانونی طور پر اپنے پاس رکھنے اور افشا کرنے کے نامناسب عمل کے الزام میں قصور وار ہونے کا اقرار کیا۔

استغاثہ کا کہنا ہے کہ جب براڈویل کتاب مرتب کر رہی تھیں، پیٹریاس نے اُنھیں کلاسی فائیڈ مٹیریل کی آٹھ جلدیں حوالے کیں، جنھیں اُنھوں نے غیرقانونی طور پر اُس وقت سے اپنے پاس رکھا ہوا تھا جب وہ افغانستان میں امریکی فوج کے اعلیٰ کمانڈر تھے۔
استغاثہ کا استدلال تھا کہ پیٹریاس نے، جنھوں نے تقریباً چار عشروں تک امریکی فوج میں خدمات انجام دیں، ابتدا میں تفتیش کاروں کے ساتھ غلط بیانی سے کام لیا، یہ دعویٰ کرتے ہوئے کہ اُنھوں نے براڈویل کو کلاسی فائیڈ مواد نہیں دیا۔

اقبال جرم کے بعد، اب پیٹریاس کو ایک سال قید ہوگی۔ استغاثہ نے 40000 ڈالر کا جرمانہ اور دو سال کی ’پروبیشن‘ سزا کی استدعا کی تھی۔ تاہم، نارتھ کیرولینا کے شہر، شارلے کے امریکی جج، ڈیوڈ کیسلر اس سے متفق نہیں تھے، اور جنھوں نے فیصلہ دیا کہ وہ جرمانے کی رقم بڑھا رہے ہیں، تاکہ ’جرم کی سنگینی کا واضح اظہار ہو‘۔
پیٹریاس نے اپنے رویے کے نتیجے میں تکلیف دہ پہلو پر معذرت کی تھی۔

XS
SM
MD
LG