رسائی کے لنکس

بھارتی انتخابات: کشمیر میں چھاپے، 600 افراد گرفتار


فائل

فائل

پولیس اور بھارتی فوجی دستوں نے یہ گرفتاریاں گزشتہ خئی روز سے جاری کریک ڈاؤن کے دوران کی ہیں جس کا مقصد بدھ کو ہونے والی پولنگ کے دوران متوقع احتجاجی مظاہروں کو ناکام بنانا ہے۔

بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں بھارتی پارلیمان کی نشستوں کے لیے ہونے والی پولنگ سے قبل حکام نے علیحدگی پسندوں کے خلاف جاری کریک ڈاؤن کے دوران 600 سے زائد افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔

کشمیر کے پولیس حکام نے منگل کو صحافیوں کو بتایا ہے کہ پولیس اور بھارتی فوجی دستوں نے یہ گرفتاریاں گزشتہ پانچ روز سے جاری کریک ڈاؤن کے دوران کی ہیں جن کا مقصد بدھ کو ہونے والی پولنگ کے دوران متوقع احتجاجی مظاہروں کو ناکام بنانا ہے۔

بھارت کی 543 رکنی پارلیمنٹ میں مسلم اکثریتی وادی کشمیر کی صرف چھ نشستیں ہیں جسے وفاق کے زیرِانتظام علاقے کا درجہ حاصل ہے۔

لیکن وادی میں بھارت مخالف مسلح تحریک اور آزادی پسند حلقوں کی جانب سے انتخابات کے بائیکاٹ کے اعلان کے باعث حفاظتی اقدامات کے پیشِ نظر ان چھ نشستوں پر ووٹنگ کا عمل مرحلہ وار منعقد ہورہا ہے جو کئی دن تک جاری رہے گا۔

گزشتہ ہفتے ہونے والی پولنگ کے دوران وادی کے دو درجن سے زائد قصبوں اور شہروں میں ہزاروں افراد نے احتجاجی مظاہرے کیے تھے جس کے دوران میں ان کی پولیس اور فوج سے جھڑپیں بھی ہوئی تھیں۔

انتخابی عمل کے دوران مسلح علیحدگی پسندوں نے حملے کرکے پولنگ عملے کےایک اہلکار کو ہلاک اور تین فوجی سپاہیوں کو زخمی کردیا تھا۔

وادی کے مختلف علاقوں میں مظاہرین اور سکیورٹی فورسز کے دوران جھڑپوں میں بھی ایک درجن سے زائد افراد زخمی ہوئے تھے جب کہ کشیدگی کے باعث کئی علاقوں میں ووٹنگ کی شرح انتہائی کم رہی تھی۔

حکام کےمطابق بدھ کو ہونے والے پولنگ کے اگلے مرحلے سے قبل پولیس اور فوج نے وادی کے مرکزی شہر سری نگر میں چھاپے مار کر 300 سے زائد طلبہ اور علیحدگی پسند جماعتوں کے کارکنوں کو حراست میں لیا ہے۔

بھارتی سکیورٹی ادارے ضلع بڈگام اور گاندر بل کے علاقوں میں بھی کئی روز سے چھاپےمار رہے ہیں جن میں اب تک تین سو کے لگ بھگ افراد کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔

خیال رہے کہ ان تینوں علاقوں میں بدھ کو پولنگ ہونی ہے۔

کشمیری قوم پرستوں اور بھارت سے آزادی کی جدوجہد کرنے والی جماعتوں نے کشمیری عوام سے ماضی کی طرح اس بار بھی انتخابی عمل کا بائیکاٹ کرنے کی اپیل کر رکھی ہے۔
XS
SM
MD
LG