رسائی کے لنکس

سندھ انسداد پولیو مہم، رواں برس تین کیس رپورٹ ہوئے


سندھ میں جاری انسداد پولیو مہم کے دوران 85 لاکھ بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے

پاکستان کے دیگر صوبوں کی طرح کراچی سمیت سندھ بھر میں تین روزہ انسداد پولیو مہم جاری ہے۔ صوبہ سندھ میں گذشتہ روز شروع ہونےوالی پولیو مہم کے دوران 6 ماہ سے 5سال تک کی عمر کے 85 لاکھ بچوں کو پولیو سے بچاوٴ کے قطروں سمیت وٹامن اے کی خوراک بھی پلائی جارہی ہے۔

صوبہٴسندھ میں جاری تین روزہ پولیو مہم کے لئے 24 ہزار پولیو رضاکاروں پر مشتمل ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔

رواں سال کے دوران پاکستان میں اب تک پولیو کے 24 کیسز سامنے آچکے ہیں جن میں سے تین کیسز صوبہ سندھ میں رپورٹ ہوئے۔ پولیو وائرس سے متاثرہ دو بچوں کا تعلق کراچی جبکہ ایک کا تعلق سندھ کے شہر دادو سے ہے۔

پولیو کے مزید کیسز کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں اِی پی آئی کے صوبائی پروگرام مینجر، ڈاکٹر مظہر خمیسانی نے ’وائس آف امریکہ‘ کو بتایا کہ ’سندھ میں سیلاب اور تیز بارشوں کے باعث مزید بیماریاں پھیل رہی ہیں۔ تاہم، پولیو کے وائرس کے بارے میں مزید کچھ نہیں کہا جا سکتا۔

رواں ماہ کراچی میں پولیو کیس سامنے آنے پر ان کا کہنا تھا کہ گڈاپ ٹاوٴن میں کیس سامنے آنے کی وجہ بچے کی قوت مدافعت ہے۔

بعض اوقات، قوت مدافعت کمزور ہونے پر پولیو سے بچاوٴ کی دوا بھی اثر نہیں کرتی جسکے باعث بچے پولیو کی بیماری کا شکار ہوجاتے ہیں۔

ای ڈی او ہیلتھ کراچی ڈاکٹر ظفر اعجاز کا کہنا ہے کہ، ’کراچی کے دو اضلاع کے علاوہ صوبے بھر میں پولیو مہم جاری ہے جبکہ ضمنی انتخابات کے دوران سیکیورٹی خدشات کے باعث ضلع شرقی اور غربی میں پولیو مہم رواں ہفتے 26 اگست سے شروع کیجائیگی‘۔
XS
SM
MD
LG