رسائی کے لنکس

یکم مئی سے نمازیں ایک ہی وقت پر ادا ہوں گی: سردار یوسف


یکم مئی سے اسلام آباد اور اس کے مضافات میں ایک ہی وقت میں نمازیں ادا کرنے کا نظام متعارف کرایا جائے گا۔ شیعہ، بریلوی، دیوبندی و اہل حدیث علماء اور سردار یوسف کے درمیان ملاقات ہوچکی ہے اور اس حوالے سے تمام فرقوں میں ہم آہنگی پائی جاتی ہے

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یکم مئی سے شہر کی تمام مساجد میں ایک ہی وقت پر اذان اور نماز ادا کی جائے گی۔ وفاقی وزیر مذہبی امور سردار یوسف کے مطابق یہ ’نظام صلوٰة‘ اسلام آباد کے بعد پورے ملک میں رائج کیا جائے گا۔

بدھ کو اسلام آباد میں امام کعبہ شیخ خالد لغامدی کے اعزاز میں ہونے والی ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سردار یوسف کا کہنا تھا کہ ’تمام مسالک کے علماء نے اس نظام کے نفاذ پر اتفاق کیا ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ جمعہ کو فیصل مسجد سے اس نظام کا آغاز ہوگا۔ صدر ممنون حسین بھی نماز جمعہ فیصل مسجد میں ہی ادا کریں گے۔

وزارت مذہبی امور پچھلے کئی ماہ سے اسلام آباد میں ایک ہی وقت میں نمازیں ادا کرنے سے متعلق نظام کو متعارف کرانے کے لئے کام کر رہی تھی۔

مقامی میڈیا میں وزارت مذہبی امور کے ایک سینئر عہدیدار کے حوالے سے کہا جا رہا ہے کہ نظام صلوٰة کو متعارف کرانے سے پہلے تعلیمی اداروں اور مذہبی و سیاسی جماعتوں سے متعدد اجلاس ہونا تھے۔ تاہم، بعد میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ چونکہ امام کعبہ 23 اپریل سے پاکستان کے دورے پر ہیں، لہذا ان کی موجودگی میں ہی اس نظام کو متعارف کرادیا جائے۔

وزیر مذہبی امور سردار یوسف نے بدھ کو میڈیا سے خطاب میں کہا کہ دانشوروں اور آئمہ نے فیصلہ کیا ہے کہ یکم مئی سے اسلام آباد اور اس کے مضافات میں ایک ہی وقت میں نمازیں ادا کرنے کا نظام متعارف کرایا جائے گا۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اسلام آباد کے بعد ملک کے باقی حصوں میں بھی یہی نظام نافذ العمل ہوگا۔

یکساں وقت میں نمازیں ادا کرنے سے متعلق نظام پر 16 اپریل کو شیعہ، بریلوی، دیوبندی و اہل حدیث علماء اور سردار یوسف کے درمیان ملاقات ہوچکی ہے اور اس حوالے سے تمام فرقوں میں ہم آہنگی پائی جاتی ہے۔

وزارت مذہبی امور اس حوالے سے باقاعدہ ایک کلینڈر بھی تیار کر چکی ہے جو بہت جلد جاری کردیا جائے گا۔ اس کلینڈر میں سارے سال کے لئے اذانوں اور نمازوں کا وقت درج ہے۔

XS
SM
MD
LG