رسائی کے لنکس

امریکی اسلامی تنظیموں کی طرف سے راشد حسین کی تعیناتی کا خیر مقدم


عالمی امن کے فروغ کے لیے راشد حسین کی تعیناتی بہترین انتخاب ثابت ہوگی

امریکہ کی معروف نمائندہ اسلامی تنظیموں نے صدر اوباما کی طرف سے وہائیٹ ہاؤس کےمعاون قانونی مشیر، راشد حسین کا اسلامی ممالک کی تنظیم (او آئی سی) کے لیے امریکہ کا خصوصی سفارت کار مقرر کیے جانے کا خیر مقدم کیا ہے۔

منگل کے دِٕن جاری ہونے والے خیرمقدمی بیان میں اسلامک سوسائٹی آف نارتھ امریکہ (اِسنا) کی صدر اِنگرڈ میٹسن نے کہا کہ عالمی امن کے فروغ کے لیے لازم ہے کہ مسلم ممالک کے ساتھ بہتر تعلقات استوار ہوں، اور اِس کام کو سر انجام دینے میں راشد حسین کی تعیناتی بہترین انتخاب ثابت ہوگی۔

اُنھوں نے کہا کہ مسٹر حسین ایک تجربہ کار قانون داں ہیں جِن کی امریکی مسلم کمیونٹی میں عزت کی جاتی ہے۔ وہ مسلم تارکینِ وطن کے خاندان کے چشم و چراغ ہیں، جو ٹیکساس کے پلانوشہر میں پلے بڑھے۔

واشنگٹن میں قائم، کونسل آن امریکن اسلامک رلیشنز (کرما) نے بھی خصوصی سفارت کار کے طور پر راشد حسین کی تعیناتی کا خیر مقدم کیا ہے۔

کونسل کا کہنا ہے کہ راشد حسین اسلامی دنیا کے ساتھ تعلقات کو مثبت انداز سے استوار کرنے میں معاون ثابت ہوں گے، اور وہ صدر کو براہِ راست دنیا بھر کے مسلمانوں کے خیالات اور تشویش سے آگاہ کیا کریں گے۔

نہاد اواد، کری کے انتظامی سربراہ ہیں۔ اُنھوں نے توقع ظاہر کی ہے کہ راشد حسین کی تعیناتی سے یہ پیغام ملتا ہے کہ صدر اوباما مسلم اقوام کے ساتھ تعمیری تعلقات اور تعاون کے معاملے میں سنجیدہ ہیں۔

یاد رہے کہ صدر باراک اوباما نے 13فروری کو اپنے معاون قانونی مشیر راشد حسین کو اسلامی ممالک کی تنظیم کے لیے اپنا خصوصی نمائندہ مقرر کیا ہے۔

اِس وقت،57اسلامی ممالک اِس تنظیم کے رکن ہیں، جِس اعتبار سے یہ دنیا کی دوسری بڑی حکومتی تنظیم ہے۔

امریکی صدر کا کہنا تھا کہ راشد حسین وائیٹ ہاؤس سٹاف کے ایک قریبی اور قابلِ بھروسہ رکن ہیں جِنھوں نے شراکت داری کے فروغ میں نمایاں کام انجام دیا ہے، جِس کی طرف قاہرہ کے اپنے خطاب میں صدر نے زور دیا تھا۔ ‘حافظِ قرآن کی حیثیت سے وہ امریکی مسلم کمیونٹی میں عزت کی نگاہ سے دیکھے جاتے ہیں، اور میں شکرگزار ہوں کہ اُنھوں نے اِس ذمہ داری کی حامی بھری ہے۔’
اب تک راشد حسین نے وائیٹ ہاؤس میں قومی سلامتی، نئے میڈیا، سائنس اور ٹیکنالوجی کے معاملات کا کام سنبھال رکھا تھا۔

مسٹر راشد حسین نے قاہرہ میں صدر اوباما کے 2009ء کے خطاب کا بنیادی خاکہ تیار کرنے میں قومی سلامتی سے متعلق سٹاف کے ساتھ کام کیا، جو ایک نئے آغاز کا موجب بنا۔

اِس سے قبل، مسٹر حسین امریکی محکمہٴ انصاف کی طرف سے مقدمات کی پیروی کرتے رہے ہیں۔ وہ ایوان کی عدالتی کمیٹی کے قانون سازی سے متعلق امور کے نائب اور قومی سلامتی کے امور سےوابستہ رہے ہیں۔

XS
SM
MD
LG