رسائی کے لنکس

روس:ایران کو دفاعی میزائل سسٹم فروخت نہ کرنے کا فیصلہ

  • ب

روس کے صدر دمتری مدویدف نے ایران کو S-300دفاعی میزائل سسٹم کی فروخت پر پابندی عائد کردی ہے۔

کریملن کا کہنا ہے کہ مسٹر مدویدف کے اس فیصلے کے بعد ایران کو ٹینک،ہوائی جہاز اور کشتیاں بھی فروخت نہیں کی جائیں گی۔

روس کے مسلح افواج کے سربراہ جنرل نکولائی ماکاروف نے اس سے پہلے کہا تھا کہ کہ دفاعی میزائل سسٹم کی فراہمی اقوام متحدہ کی پابندیوں کی خلاف ورزی ہوگی۔

امریکہ نے روس کے اس اقدام کو سراہا ہے۔ وائٹ ہاؤس کے ترجمان کا کہنا تھا کہ مسٹر مدویدف نے ایران کو اپنے عالمی فرائض کے لیے جوابدہ بنانے کے لیے اہم کردار ادا کیا ہے۔

اقوام متحدہ نے رواں سال جون میں ایران پریورینیم کی افزودگی سے انکار کے بعد چوتھے مرحلے کی پابندیاں عائد کی تھیں۔ امریکہ اور مغربی دنیا کو شک ہے کہ ایران اپنے جوہری پروگرام کو ہتھیار بنانے کے لیے استعمال کررہا ہے جب کہ تہران ان الزمات کو رد کرتا ہے۔

S-300دفاعی میزائل سسٹم ایک متحرک دورمار میزائل ایئر ڈیفنس سسٹم ہے جو بیلسٹک اور کروز میزائل کے علاوہ نیچی پرواز کرنے والے طیاروں کی نشاندہی اور ان کو تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

مغربی ممالک نے ماسکو کی طرف سے ایران کو دفاعی سسٹم کی فراہمی کی یہ کہہ کر مخالفت کی تھی کہ ایران اسے اپنی جوہری تنصیبات کی حفاظت کے لیے استعمال کرسکتا ہے۔

XS
SM
MD
LG