رسائی کے لنکس

ڈرائیونگ پر ممانعت:سعودی خاتون کو 10کوڑوں کی سزا


ڈرائیونگ پر ممانعت:سعودی خاتون کو 10کوڑوں کی سزا

ڈرائیونگ پر ممانعت:سعودی خاتون کو 10کوڑوں کی سزا

انسانی حقوق کےایک گروپ کا کہنا ہے کہ ڈرائیونگ کے جرم میں مملکت کی دیگر دو خواتین کو الزامات کا سامنا ہے

سعودی عرب کے سرگرم کارکنوں کا کہنا ہے کہ جدہ کی ایک عدالت نےقدامت پسند مملکت میں خواتین کی ڈرائیونگ پر ممانعت کو چیلنج کرنے کی پاداش میں ایک سعودی خاتون کو دس کوڑوں کی سزا سنائی ہے۔

عدالت نے یہ سزا ایسےوقت سنائی ہے جب سعودی عرب کے شاہ عبد اللہ نے دو روز قبل اعلان کیا تھا کہ خواتین کو حقِ رائے دہی اور 2015ء کے بلدیاتی انتخابات میں امیدوار بننے کا اختیار حاصل ہوگا ۔

’ایمنسٹی انٹرنیشنل‘نے منگل کے روز ووٹنگ کا حق تسلیم کیےجانے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہنشاہ کی طرف سے اصلاحات کے دعوے بے مقصد ہوں گے، اگرخواتین کو آزادانہ طور پر چلنے پھرنے کی آزادی کے حق کے استعمال پر جسمانی سزا کا سامنا کرنا پڑتا ہو۔

انسانی حقوق کے گروپ کا کہنا ہے کہ ڈرائیونگ کے جرم میں مملکت کی دیگر دو خواتین کو الزامات کا سامنا ہے۔

سعودی عرب میں تحریری طور پر خواتین کی ڈرائیونگ پر کوئی پابندی عائدنہیں ہے، لیکن اِن کی بنیاد وہ فتوے ہیں جو اسلام کی بنیاد پرست تشریح پر مبنی ہیں جنھیں وہابی ازم کہا جاتا ہے۔

اِس سے قبل اِسی سال سعودی عرب کی کچھ خواتین نے بادشاہت میں عورتوں کی ڈرائیونگ پر عائدروایتی پابندی کی خلاف ورزی کرتے ہوئے گاڑیاں چلانے کی کوشش کی۔ اِس خلاف ورزی کی پاداش میں کئی ایک گرفتاریاں عمل میں لائی گئی تھیں۔

XS
SM
MD
LG