رسائی کے لنکس

سینیٹ ووٹ، سمجھوتے پر عمل درآمد میں ’اہم پیش رفت‘: کیری


وزیر خارجہ نے کہا کہ عمل درآمد پر یہ سمجھوتا ہمارے دوستوں اور مشرق وسطیٰ میں ہمارے اتحادیوں اور ساری دنیا کو محفوظ بنادے گا۔۔۔۔۔۔ تاہم، مجھے یقین ہے کہ اس سمجھوتے کے فوائد ممکنہ خامیوں سے کہیں زیادہ ہیں

امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے کہا ہے کہ امریکی سینیٹ کا ووٹ امریکہ اور اُس کے بین الاقوامی پارٹنرز کی جانب سے 14 جولائی کو ویانا میں طے کیے جانے والے سمجھوتے پر ’عمل درآمد‘ کے حوالے سے ایک اہم پیش رفت کے مترادف ہے، جس کا مقصد ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے سے باز رکھنا ہے۔

کیری نے یہ بات امریکی سینیٹ کی جانب سے جمعرات کو دیر گئے سمجھوتے کے خلاف ووٹ کو مسترد کیے جانے پر اپنے بیان میں کہی ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ عمل درآمد پر یہ سمجھوتا ہمارے دوستوں اور مشرق وسطیٰ میں ہمارے اتحادیوں اور ساری دنیا کو محفوظ بنادے گا۔

اُنھوں نے سینیٹ کے اُن ارکان کا شکریہ ادا کیا جنھوں نے سمجھوتے کا دھیان سے جائزہ لیا اور اُس کی شقوں پر غور و خوض کیا۔

جان کیری نے کہا کہ اُن کے متعدد سابقہ ساتھیوں کے لیے یہ انتہائی مشکل نوعیت کا فیصلہ تھا۔ تاہم، مجھے یقین ہے کہ اس سمجھوتے کے فوائد ممکنہ خامیوں سے کہیں زیادہ ہیں۔

مشترکہ مربوط ’پلان آف ایکشن‘ میں طے کی گئی تفصیلی تصدیق اور شفافیت کی شقیں موجود ہیں؛ اس میں لازمی ٹھوس کٹوتیوں کا ذکر موجود ہے جن کے تحت ایران کی جوہری سرگرمیوں کو دیرپہ طور پر محدود کیا گیا ہے؛ اور، اس سے ایران کو جوہری ہتھیار تشکیل دینے سے ہمیشہ کے لیے منع کیا گیا ہے۔

اُنھوں نے کہا کہ آگے بڑھتے ہوئے، امریکی محکمہٴخارجہ اور مجموعی انتظامیہ اس سمجھوتے پر عمل درآمد اور اس کی تصدیق کو یقینی بنائے گا، تاکہ یہ دیکھا جاسکے کہ ایران طے ہونے والے عزم پر پورا اترتا ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکہ اپنے ساجھے داروں اور خطے میں اپنے اتحادیوں کے ساتھ قریبی رابطے میں رہ کر کام کرے گا، تاکہ ہمارا سکیورٹی تعاون مزید گہرا ہو اور ایران کی عدم استحکام پیدا کرنے کی کوششوں کا انسداد ہو، جس میں ایران کی جانب سے دہشت گردوں کی حمایت کے معاملے کو مد نظر رکھا جانا بھی شامل ہے۔

XS
SM
MD
LG