رسائی کے لنکس


بالی وڈ کے فنکار شاہ رخ خان آج کل بہت سے مختلف حوالوں سے خبروں میں ہیں۔ چاہے آئی پی ایل میں پاکستانی کھلاڑیوں کو شامل نہ کیے جانے پر ان کی نکتہ چینی ہواور اس پر ان کے خلاف ہندو انتہا پسند تنظیم شیو سینا کا احتجاج، لاس اینجلس کے مادام تساد میوزیم میں انکے مومی مجسمےکی تنصیب ہو یا پھر انکی نئی فلم مائی نیم از خان کی تشہیری مہم۔

وائس آف امریکہ کے لیے اپنے ایک خصوصی انٹرویو میں شاہ رخ خان اور کاجول نے آئی پی ایل اور پاکستان بھارت تعلقات اور اپنی آنے والی فلم مائی نیم از خان کے حوالے سے بات چیت کی ۔

شاہ رخ خان کا، جو اپنی آنے والی فلم مائی نیم از خان کی اشتہاری مہم کے سلسلے میں امریکہ آئے ہوئے ہیں، کہنا تھا کہ آئی پی ایل کے بارے ان کے بیان کو متنازع بنا دیے جانے پر انہیں دکھ ہے۔انہوں نے کہا کہ میرا نہیں خیال کہ اس چیز کو اتنی اہمیت دینی چاہیے۔ ٕمیں کوئی ایسا کام نہیں کرنا چاہتا جس سے کسی کی دل آزاری ہو ۔ میں ایک فنکار ہوں ، میرا کام لوگوں کے چہروں پر مسکراہٹ بکھیرنا ہے۔ یہی میرا کام ہے اور میری زندگی ہے۔ جب اس طرح کا کوئی واقعہ ہوتا ہے تو میں سمجھتا ہوں یہ ٹھیک نہیں، یہ بے حسی پر مبنی غیر جمہوری رویہ ہے۔ ایک بھارتی ہونے کے ناطے مجھے اور ہربھارتی کو افسوس ہے کہ ایسا ہوا۔ ہمیں کسی اور کے ساتھ تعلقات سے پہلے اپنے مسائل کو سمجھنا چاہیے ۔ مجھے افسوس ہے کہ میرے ملک میں ایسا ہوا اور کسی نہ کسی طرح میں اسکا ذمہ دار ٹھہرایا جا رہا ہوں۔میں تو ایک فنکار ہوں مجھے اتنی اہمیت کیوں دی جا رہی ہے۔

انڈیا اور پاکستان کے تعلقات کے حوالے سے شاہ رخ خان کا کہنا تھا کہ انکی خواہش ہے کہ تعلقات اچھے ہوں۔انہوں نے کہا کہ میرے خیال میں جب آپ تعلق کی بات کرتے ہیں تو بات صرف اچھے تعلقات کی ہونی چاہیے ۔ہم ایک دوسرے سے اچھے طریقے سے پیش آئیں۔ نہ صرف پاکستان بلکہ ہر ملک سے تعلقات اچھے ہونے چاہیئیں ۔

کاجول کا بھی یہی کہناتھا کہ تمام ملکوں کے اچھے تعلقات قائم کرنا ضروری ویں۔

اپنی نئی آنے والی فلم مائی نیم از خان کی اشتہاری مہم کے سلسلے میں شاہ رخ خان اور کاجول نے نیو یارک کی ناس ڈاک سٹاک ایکس چینج کی اوپننگ بیل رنگ کی ۔ وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے پہلے جنوبی ایشیائی فنکار ہیں۔ شاہ رخ کا کہنا تھا کہ میں کبھی بھی اور کاجول بھی ،کبھی سٹاک ایکسچینج میں نہیں گئے۔

شاہ رخ اور کاجول کی بہت سی فلمیں میں کامیابی کے جھنڈے گاڑھ چکے ہیں، جن میں دل والے دلہنیا لے جائینگے اور کچھ کچھ ہوتا ہے جیسی ریکارڈ ساز فلمیں بھی شامل ہیں۔ کرن جوہر کی نئی فلم مائی نیم از خان میں یہ جوڑی کافی عرصے بعد ایک بار پھر سکرین پر جلوہ گر ہو رہی ہے ۔ 11/9 کے پس منظر میں پیش آنے والے واقعات پر مبنی اس فلم سے انھیں بہت سی تعلقات بھی وابستہ ہیں۔

شاہ رخ خان کا کہنا ہے کہ فلم کا نام مائی نیم از خان ہے۔ کاجول کے آنے سے بہت فرق پڑا ہے ۔ ہم اچھے دوست ہیں اور اس طرح کی فلم کرنا ، شاید کاجول یہ فلم کرنے سے پہلے کئی دفعہ سوچتی اگر میں یا کرن نہ ہوتے۔

کاجول کا کہنا تھا کہ جب آپ ایسا کچھ کرنے جا رہے ہوں تو آپکو ایسے لوگوں کی ضرورت ہوتی ہے جن پر آپ بھروسہ کر سکیں۔

شاہ رخ خان نے فلم کے بارے میں بتایا کہ یہ ایک بڑی اور حساس فلم ہے۔ یہ صرف امیگریشن یا انٹروگیشن کے بارے میں نہیں بلکہ دنیا اور انسانیت کے بارے میں ہے۔

جب کہ کاجول کا کہناتھا کہ یہ انسانوں کےباہمی تعلقات پر مبنی فلم ہے کہ انسان کیسے مشکلات میں ایک دوسرے کا ساتھ دیتے ہیں ۔

XS
SM
MD
LG