رسائی کے لنکس

سندھ کی مزدور ہندو خاتون کی انتخابی مہم


file photo

file photo

الیکشن کے دن قریب آتے ہی ویرو کولہی اپنے حلقے کے افراد میں اپنی مدد آپ کے تحت گھر گھر جاکر انتخابی مہم چلارہی ہے

ہاتھوں میں پلاسٹک کی چوڑیاں، گلے میں منگل سوتر، ماتھے پر بندیا سجائےچولی،گھاگھرا اور سر پر دوپٹہ پہنے یہ ہے سندھ کے مضافاتی شہر حیدرآباد کے دیہات " جھڈو" کی رہائشی "ویرو کولہی" نامی ہندو خاتون جو آزاد امیدوار کی حیثیِت سے 11 مئی کو ہونےوالےالیکشن کا حصہ لینے جا رہی ہے۔

پاکستان کی اقلیتی جماعت ہندو برادری کی ویرو کولہی ایک ان پڑھ اور کسان گھرانے سے تعلق رکھتی ہےسندھ کے بیشتر دیہاتوں کی طرح ویرو کولہی کے گاؤں کے افراد بھی کھیتی باڑی کرکے اپنا اور بچوں کا پیٹ پالتے ہیں۔

وائس آف امریکہ سے گفتگو میں ویرو کولہی کا کہنا تھا کہ"میرا الیکشن لڑنے کا ایک ہی مقصد ہے کہ کسانوں کو غلامی کی زندگی سے آزادی ملے"

ویرو کولہی نے بتایا کہ "میں نے جب سے آنکھ کھولی ہے کسانوں کو زمینداروں اور جاگیرداروں کے دباؤ میں غلاموں جیسی زندگی گزارتے دیکھا ہے یہ کسان پورا دن کام کرتے ہیں بدلے میں ان کو ان کے کام کے برابر اجرت نہیں دی جاتی ہے، اگر میں جیت گئی تو کسانوں کو ان کا حق دلواں گی جو انھیں آج تک نہ مل سکا۔"

ویرو کولہی نے بتایا کہ اس کے شوہر کا انتقال ہوچکا ہے اور اس کے 5 بچے ہیں۔ ویروکھیتی باڑی کے ساتھ گاؤں والوں کے بنیادی مسائل کے حل کے لیے بھی کام کر رہی ہے۔ اسی وجہ سے ان پڑھ ہونےکے باوجود ویرو کولہی گاؤں میں کافی سرگرم خاتون کی حیثیت رکھتی ہے۔

الیکشن کے قریب آتے ہی ویرو کولہی اپنے حلقے کے افراد میں اپنی مدد آپ کے تحت انتخابی مہم چلا رہی ہے۔ ویرو کولہی صبح ہوتے ہی پیدل سفر شروع کر دیتی ہے اور گھر گھر جاکر ہر فرد کو ووٹ کی اہمیت کےبارے میں آگاہی دےرہی ہے۔


ویرو کولہی مزید بتاتی ہے گاوں کی ہندو خاتون کے الیکشن میں حصہ بننے پر پورا گاوں نہ صرف خوش ہے بلکہ اس کی ہمت بھی بڑھارہا ہے۔جب کہ دوسری جانب حلقے کے مقابل امیدواروں کی جانب سے اس کا الیکشن لڑنا کھٹک رہاہے۔

ویرو کولہی کا کہنا تھاکہ" ایک عورت ہونےکے ناطے مجھ پر بہت دباؤ ہے جس حلقے سے میں انتخاب لڑنے جارہی ہوں وہاں کی چند باثر سیاسی امیدواروں کی جانب سے پیسے کا لالچ دیکر الیکشن نہ لڑنے کا کہا جارہا ہے۔طاقتور جاگیردار اور وڈیرے افراد نہیں چاہتے کہ میں الیکشن لڑوں اور گاؤں کے غریبوں کی آواز بنوں"۔

ویرو کا کہنا ہے کہ میں چند پیسوں کے لیے اپنا مقصد ختم نہیں کرسکتی اور نہ ہی اپنے حلقے کے عوام کو چھوڑ سکتی ہوں۔

قبائلی خاتون بادام زری کی طرح ویروکولہی بھی الیکشن کا حصہ بن کر اپنے ملک اور عوام کی خدمت کرنے کے لیے کافی پرعزم دکھائی دیتی ہے۔]
XS
SM
MD
LG