رسائی کے لنکس

شمسی توانائی کے مسائل


شمسی توانائی کے مسائل

شمسی توانائی کے مسائل

امریکی ریاست کولوریڈو کی وادی سین لوئیس ایک ریگستانی علاقہ ہے جہاں سال میں 340 دنوں سے زیادہ سورج اپنی روشنی بکھیرتا رہتاہے۔ ان دنوں وہاں سورج کی کرنوں کو شمسی توانائی میں تبدیل کرنے کے ایک بڑے منصوبے پر کام ہورہا ہے۔ نک تھیل اس پلانٹ کے منتظم ہیں۔ان کا کہناہے کہ 220 ایکڑ کےرقبے پر شمسی توانائی کے ایک لاکھ سےزیادہ پینلز لگائے گئے ہیں جو سورج کے ساتھ ساتھ اپنا رخ بدلتے رہتے ہیں۔ صبح کو ان کا رخ مشرق جبکہ شام کو مغرب کی جانب ہوتاہے۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ یہ پلانٹ ساڑھے سات ہزار گھروں کو بجلی فراہم کر سکتا ہے۔

شمسی توانائی کے پینلز کی تعداد میں روز بروز اضافے کی وجہ سے ریاست نیو جرسی اور کیلی فورنیا کے بعدیہ علاقہ امریکہ میں شمسی توانائی حاصل کرنے کا تیسرا بڑا ذریعہ بن چکا ہے۔
مگر صرف سورج کی روشنی کا ہونا کافی نہیں، ریاست کولوریڈو کے ایک علاقے ایلموسا میں شمسی توانائی کے چھ بڑے پلانٹس ہیں۔ ایک سرکاری اہل کار ڈیریس ایلن کہتے ہیں کہ شمسی توانائی کے حصول کے لیے شہر کے بنیادی ڈھانچے میں چند تبدیلیوں کی ضرورت ہے۔کیونکہ سین لوئیس ایک زراعی علاقہ ہے جہاں آلو، اناج اورمویشیوں کے لیے چارہ کاشت کیا جاتا ہے۔ مقامی کسانوں کے نزدیک شمسی توانائی کے لیے بڑے پیمانے پر زمین کے حصول سے زرعی شعبے کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

اس کے ساتھ ساتھ علاقے کی نہریں اور آبی وسائل تیزی سے ختم ہونے کی وجہ سے زراعت کے شعبے کو خطرات درپیش ہیں۔ جبکہ پانی کی عدم دستیابی شمسی توانائی کے حصول میں بھی رکاوٹ بن سکتی ہے۔

شمسی توانائی کے پینلز پر جمنے والی دھول کو پانی سے دھویا جاتا ہے۔ پینلز کو پانی کی فراہمی کے منصوبوں سے مستقبل میں نہ صرف پانی کے وسائل بلکہ زراعت کے لیے زمین کی دستیابی پر بھی متاثر ہوسکتی ہے۔

اسٹیوکہتے ہیں کہ اگر یہ سلسلہ اسی طرح جا ری رہا تومستقبل میں 60 سے 80 ہزار ایکڑ کا رقبہ زراعت کے قابل نہیں رہے گا۔

جارج وائٹنز اور ان کا خاندان تین نسلوں سے زراعت سے وابستہ ہے۔ حال ہی میں انہوں نے، اپنی اہلیہ ، جو ماحولیات کے تحفظ کی ایک سرگرم کارکن بھی ہیں، اپنے پڑوسیوں کے ساتھ مل کر اپنے علاقے میں 800 ایکڑ رقبے پر بنائے جانے والے شمسی توانائی کے پلانٹ کے خلاف مقدمہ لڑا۔ وہ یہ مقدمہ جیت گئے۔

وائٹنز کے مطابق شمسی توانائی جیسی صنعتیں زراعت کا متبادل ثابت نہیں ہو سکتیں۔ ان کا کہنا ہے کہ امریکیوں کو توانائی حاصل کرنے کی جستجو کی بجائے توانائی کی بچت کے طریقے سیکھنے کی ضرورت ہے۔

XS
SM
MD
LG