رسائی کے لنکس

صومالیہ میں قحط کا خطرہ، فوری امداد کی اپیل


صومالیہ کے خشک سالی سے متاثرہ علاقے میں عورتیں پانی کی تلاش میں۔ فروری 2017

اقوام متحدہ کے مطابق صومالیہ میں جنم لینے والے بحران سے 62 لاکھ افراد کے متاثر ہونے کا خطرہ ہے جو ملک کی نصف آبادی سے زیادہ تعداد ہے۔

صومالیہ کے صدر ٕمحمد عبدالحیی فارماجو نے کہا ہے کہ ان کے ملک کو تباہ کن صورت حال کا سامنا ہے۔ یہ اعلان ایک ایسے موقع پر ہوا ہے جب قرن افریقہ کے ملکوں کو شديد خشک سالی اور خوراک کا بحران درپیش ہے۔

اقوام متحدہ کے مطابق صومالیہ میں جنم لینے والے بحران سے 62 لاکھ افراد کے متاثر ہونے کا خطرہ ہے جو ملک کی نصف آبادی سے زیادہ تعداد ہے۔

ملک کے مشرقی حصوں میں خشک سالی کی صورت حال زیادہ سنگین ہے۔

پچھلے سال سے بارشیں نہ ہونے اور خشک سالی مسلسل جاری رہنے سے اجناس کی پیداوار اور مویشیوں کی تعداد میں تیزی سے کمی ہوئی ہے۔

گذشتہ ہفتے اقوام متحدہ کے امدادی اداروں نے خبردار کیا تھا کہ صومالیہ کو ایک بہت بڑی تباہی سے بچانے کے لیے ہمارے پاس اب صرف دو مہینے کا وقت رہ گیا ہے۔

منگل کے روز موغادیشو میں خشک سالی کے موضوع پر بات کرتے ہوئے صومالیہ کے صدر فارماجو نے بین الاقوامی کمیونٹی اور صومالي امدادی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ اپنے وہ ہنگامی امداد کے پروگراموں کی سطح میں اضافہ کریں۔

XS
SM
MD
LG