رسائی کے لنکس

صومالیہ: کنیڈا کا ایک رنگرُوٹ لڑائى میں مارا گیا


صومالیہ: کنیڈا کا ایک رنگرُوٹ لڑائى میں مارا گیا

صومالیہ: کنیڈا کا ایک رنگرُوٹ لڑائى میں مارا گیا

صومالیہ کے باغی گروپ الشّباب نے کہا ہے کہ کنیڈا کا ایک نوجوان ، جو اُس کے ساتھ مل کر لڑنے کے لیے صومالیہ پہنچا تھا، ایک لڑائى میں مارا گیا۔

الشباب نے اس آدمی کی موت کا اعلان، جس کا نام اُس نے محمد المہاجری بتا یا ہے ، اس ہفتے انٹر نیٹ کی سائٹ یُو ٹیوب پر پوسٹ کیے جانے والے ایک وِ ڈیو میں کیا ہے۔

ٹورانٹو میں دوستوں اور رشتے داروں نے اس شخص کو پہچان لیا ہے اور انہوں نے اُس کا نام محمد علمی ابراہیم بتایا ہے۔ وہ کنیڈا کے اُن چھ صومالی نژاد شہریوں میں سے تھا جو حالیہ مہینوں میں الشّباب میں شامل ہوئے ہیں۔

دو منٹ کے وِ ڈیو میں ابراہیم کو سعودی عرب میں کسی مقام پر دکھایا گیا ہے ۔ لیکن اس میں الشّباب کا یا صومالیہ جاکر لڑنے کے ارادے کا کوئى ذکر نہیں ہے۔

وِڈیو کے ساتھ پوسٹ کیے ہوئے متن میں کہا گیا ہے کہ ‘ابراہیم ثابت قدمی اور سکون کے ساتھ موت کی طرف جھپٹ رہا تھا۔’ لیکن اس بارے میں کوئى تفصیل نہیں بتائى گئى کہ وہ کب اور کس طرح مبیّنہ طور پر ہلاک ہوا۔

نہ ہی کنیڈا اور نہ صومالیہ کے عہدے داروں نے اُس کی موت کی تصدیق نہیں کی۔

XS
SM
MD
LG