رسائی کے لنکس

موغا دیشو بندر گاہ پر ٹرک بم دھماکہ، 20 ہلاک


موغادیشو کی بندرگاہ پر ٹرک بم دھماکے کے بعد ٹرالے اور ٹرک کھڑے ہیں۔ 11 دسمبر 2016

موغادیشو کی بندرگاہ پر ٹرک بم دھماکے کے بعد ٹرالے اور ٹرک کھڑے ہیں۔ 11 دسمبر 2016

عینی شاہدین اور پولیس کا کہنا ہے کہ ٹرک نے بندرگاہ کے ٹیکس کے دفتر کو ٹکر ماری جہاں بہت سے ملازم اور مزور اپنے کام پر جانے کے لیے  قطار میں کھڑے ہوئے تھے۔

اتوار کی صبح موغا دیشو کی نئی بندرگاہ کے باہر بارود سے بھرے ہوئے ایک ٹرک میں دھماکے سے کم ازکم 20 افراد ہلاک اوربہت سے زخمی ہوگئے۔

دھماکے کا ہدف سیکیورٹی فورسز او ر بندرگاہ کے کارکن تھے۔

موغادیشو پولیس کے سربراہ کرنل بشیر ابشار گدی نے وائس آف امریکہ کی صومالی سروس کو بتایا کہ حکام اس بارے میں تحقیقات کر رہے ہیں کہ آیا ٹرک خودکش حملہ آور چلا رہا تھا یا اسے وہاں پہلے سے کھڑا کیا گیا تھا۔

ایک عسکریت پسند گروپ الشاب نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کا دعوی کیا ہے۔

گروپ نے کہا ہے کہ ایک خودکش بمبار ٹرک کو چلا کر بندرگاہ کی بیرونی چوکی کے پاس لے گیا تھا۔

موغادیشو میں خودکش حملے کےبعد ایک پولیس اہل کار دھماکے کے مقام پر کھڑا ہے ۔ 11 دسمبر 2016

موغادیشو میں خودکش حملے کےبعد ایک پولیس اہل کار دھماکے کے مقام پر کھڑا ہے ۔ 11 دسمبر 2016

لیکن عینی شاہدین اور پولیس کا کہنا ہے کہ ٹرک نے بندرگاہ کے ٹیکس کے دفتر کو ٹکر ماری جہاں بہت سے ملازم اور مزور اپنے کام پر جانے کے لیے قطار میں کھڑے ہوئے تھے۔

موغادیشو کی بندرگاہ کا انتظام ایک ترک کمپنی البراق چلاتی ہے جس کا صومالی حکومت کے ساتھ 20 سال کا معاہدہ ہے۔ کمپنی کے فرائض میں بندرگاہ کے انتظامات اور اس کی آرائش و مرمت شامل ہیں۔

ابھی تک یہ واضح نہیں ہوا کہ آیا اس حملے میں کسی ترک باشندے کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

تبصرے دکھائیں

XS
SM
MD
LG