رسائی کے لنکس

صومالیہ کے صدارتی محل پر مارٹر گولوں سے حملہ


موغادیشو میں صدراتی محل کا مرکزی گیٹ، فائل فوٹو

یہ حملہ ایک ایسے وقت میں ہوا جب کابینہ کے ارکان ایک اجلاس کے سلسلے میں صدارتی محل میں موجود تھے۔

جمعرات کے روز صومالي دارالحکومت موغادیشو میں صدارتی محل کے احاطے میں مارٹر گولے گرنے سے کم ازکم 7 افراد زخمی ہو گئے۔

یہ حملہ ایک ایسے وقت میں ہوا جب کابینہ کے ارکان ایک اجلاس کے سلسلے میں صدارتی محل میں موجود تھے۔

صدارتی محل کی سیکیورٹی پر مامور ایک سینیر عہدے دار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر وائس آف امریکہ کو بتایا کہ ایک مارٹر گولہ محل کے احاطے میں گرا جس سے صدارتی محل کی تین خادمائیں زخمی ہو گئیں۔

کم ازکم تین مارٹر گولے صدارتی محل کے قریب واقع ایک آبادی پر گرے۔

ایک ایمبولنس ڈرائیور نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ ایک مارٹر گولہ صدارتی محل کے قریب ایک مکان پر گرا جس سے عام لوگ زخمی ہوئے ۔ ہم نے چار زخمیوں کو اسپتال پہنچایا۔

مارٹر گولوں کا حملہ ایک ایسے وقت میں ہوا جب ملک کی نئی منتخب کابینہ کے ارکان کا پہلا اجلاس وزیر اعظم علی خیری کی سربراہی میں ہو رہا تھا۔

اس میٹنگ میں عہدے داروں نے سیکیورٹی اور ملک میں خشک سالی کی صورت حال کا جائزہ لیا۔

حملے میں کوئی حکومتی عہدے دار زخمی نہیں ہوا۔ صدر محمد عبداللہ عرب لیگ کی 28 ویں سربراہ کانفرنس کے سلسلے میں اردن کے دارالحکومت عمان میں ہیں۔

کسی نے فوری طور پر حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کا دعویٰ نہیں کیا۔ تاہم صومالیہ کا عسکریت پسند گروپ الشاب اکثر أوقات سرکاری اہداف پر اس نوعیت کے حملے کرتا رہتا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG