رسائی کے لنکس

عمان: ہزاروں جنوبی ایشیائی مزدور ہڑتال پہ چلے گئے


عرب ریاست عمان کے دارالحکومت مسقط کے ہوائی اڈے کے توسیعی منصوبے پر کام کرنے والے ہزاروں جنوبی ایشیائی مزدوروں نے ہڑتال کردی ہے۔

عرب ریاست عمان کے دارالحکومت مسقط کے ہوائی اڈے کے توسیعی منصوبے پر کام کرنے والے ہزاروں جنوبی ایشیائی مزدوروں نے ہڑتال کردی ہے۔

ہوائی اڈے کے توسیعی منصوبے کی نگران کمپنی 'بی ای بی' کے عہدیداران کے مطابق مزدوروں نے یہ ہڑتال اپنے ایک ساتھی کی گزشتہ روزہونے والی ہلاکت کے ردِ عمل میں کی ہے۔

کسی عرب ریاست میں جنوبی ایشیا سے تعلق رکھنے والے محنت کشوں کی ہڑتال کا یہ غیر معمولی واقعہ ہے۔ خیال رہے کہ خلیجی ریاستوں میں جنوبی ایشیا - خصوصاً پاکستان، بھارت اور بنگلہ دیش – سے تعلق رکھنے والے لاکھوں محنت کش کام کرتے ہیں جن کی اکثریت تعمیرات کی صنعت سے منسلک ہے۔

'بی ای بی' کے حکام کے مطابق کمپنی کی ایک بس نے پیر کو تعمیراتی منصوبے پر مامور ایک بھارتی مزدور کو کچل دیا تھا جس کے بعد منصوبے پر کام کرنے والے جنوبی ایشیائی ممالک کے لگ بھگ 10 ہزار محنت کش ہڑتال پر چلے گئے ہیں۔

تعمیراتی منصوبے پر کام کرنے والے ایک بھارتی مزدور نے برطانوی خبر رساں ایجنسی 'رائٹرز' کو بتایا کہ وہ اور اس کے ساتھی تعمیراتی سائٹ پر محنت کشوں کے لیے حفاظتی اقدامات موثر بنانے کا مطالبہ کر رہے ہیں اور کمپنی کی جانب سے اس ضمن میں کسی یقین دہانی تک ہڑتال ختم نہیں کریں گے۔

مزدوروں کی ہڑتال کے بعد امکان ہے کہ مسقط ایئرپورٹ پر ایک نئے ٹرمینل کی تعمیر کا یہ منصوبے مزید تاخیر کا شکار ہوسکتا ہے۔

حکام کے مطابق 8ء1 ارب ڈالر لاگت کے اس منصوبے کو رواں برس مکمل ہونا تھا لیکن نئے رن وے کے لیے مختص زمین کو تعمیر کے لیے موافق بنانے کی کوششوں میں تاخیر کے باعث اب اس منصوبے کی 2014ء کے اختتام تک تکمیل کا امکان ہے۔

اومانی حکومت نے ہوائی اڈے کی توسیع کا ٹھیکہ 2010ء میں 'بی ای بی' کو دیا تھا جو امریکی کمپنی 'بیک ٹیل' اور ترکی کی 'اینکا' کی مشترکہ ملکیت ہے۔
XS
SM
MD
LG