رسائی کے لنکس

شمالی کوریا آبدوز سے میزائل داغنے کے تجربات روکے: جنوبی کوریا


فائل فوٹو

فائل فوٹو

شمالی کوریا نے ہفتے کو اعلان کیا تھا کہ اس نے ایک آبدوز سے بیلسٹک میزائل داغنے کا کامیابی سے تجربہ کیا ہے تاہم اس کے وقت، تاریخ اور تجربہ کے مقام اور میزائل کی رینج کے بارے میں کوئی تفصیل فراہم نہیں کی گئ ہے۔

جنوبی کوریا نے شمالی کوریا کی طرف سے آبدوز سے داغے جانے والے بیلسٹک میزائل کے تجربہ پر تشیویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے ’’سنگین اور پریشان کن‘‘ قرار دیا اور پیانگ یانگ پر زور دیا ہے کہ وہ فوری طور پر اس ہتھیار پر مزید کام کو روک دے۔

شمالی کوریا نے ہفتے کو اعلان کیا تھا کہ اس نے ایک آبدوز سے بیلسٹک میزائل داغنے کا کامیابی سے تجربہ کیا ہے تاہم اس کے وقت، تاریخ اور تجربہ کے مقام اور میزائل کی رینج کے بارے میں کوئی تفصیل فراہم نہیں کی گئی ہے۔

تجزیہ کاروں کی رائے اس حوالے سے منقسم ہے کہ شمالی کوریا کی آبدوزیں پرانی ہونے کے باوجود ان سے میزائل داغنے کی صلاحیت میں کتنی ترقی ہوئی ہے۔

جنوبی کوریا کی وزارت دفاع کے ترجمان کم من سیوک نے ہفتے کو نامہ نگاروں کو بتایا کہ ان کے بقول اس ٹیکنالوجی کو ترقی دینے کے لیے چار سے پانچ سال (کا عرصہ) درکار ہیں۔

تاہم وزارت دفاع کے ایک عہدیدار، جن کی شناخت نہیں کی گئی، کے بقول شمالی کوریا بیلسٹک میزائل سے لیس مکمل طور پر آپریشنل آبدوزیں تین سالوں کے اندر بنا سکتا ہے۔

دوسری طرف جنوبی کوریا کی یونیفیکیشن کی وزارت نے پیر کو میزائل کے تجربے کی مذمت کرتے ہوئے غیرسرکاری گروپوں پر زور دیا ہے کہ وہ قومی یگانگت کو بحال کرنے کے لیے شمالی اور جنوبی کورین (باشندوں)کے مابین تبادلوں کو فروغ دیں۔

جبکہ جنوبی کوریا کے وزیر دفاع ہان من کو نے شمالی کوریا کے طرف سے اشتعال کی صورت میں ’’بے رحمانہ‘‘ جوابی کارروائی کی دھمکی دی ہے۔

XS
SM
MD
LG