رسائی کے لنکس

اسپیشل اولمپکس ورلڈ گیمز میں پاکستانی کھلاڑیوں کی شرکت


امریکہ کے شہر لاس اینجلس میں رواں سال جولائی میں اسپیشل اولمپکس ورلڈ گیمز کا انعقاد کیا جا رہا ہے جو ذہنی طور پر معذور افراد کی مہارتوں اور کارناموں کو اجاگر کرنے کے لیے دنیا میں کھیلوں کا سب سے بڑا مقابلہ ہے۔

امریکہ کے شہر لاس اینجلس میں رواں سال جولائی میں اسپیشل اولمپکس ورلڈ گیمز کا انعقاد کیا جا رہا ہے جو ذہنی طور پر معذور افراد کی مہارتوں اور کارناموں کو اجاگر کرنے کے لیے دنیا میں کھیلوں کا سب سے بڑا مقابلہ ہے۔ ان مقابلوں میں پاکستان سے بھی 85 رکنی دستہ شرکت کرے گا۔

اسلام آباد میں امریکی سفارتخانے نے اسپیشل اولمپکس میں حصہ لینے والے کھلاڑیوں، کوچز اور امدادی عملے کے لیے ایک تعارفی تقریب کا انعقاد کیا، جو معذور افراد کے حقوق کے فروغ کے لیے کوشاں امریکی محکمہ خارجہ کے ’انکلوژن ڈپلومیسی آؤٹ ریچ پروگرام‘ کا حصہ تھا۔

اس موقع پر پاکستانی کھلاڑی فرح وہرہ نے کہا کہ وہ امریکہ جانے پر بہت خوش ہیں اور امید کرتی ہیں کہ وہاں سے گولڈ میڈل جیت کر آئیں گی۔

اس موقع پر امریکی سفارت خانے کی ایک عہدیدار اینجلا ایگلرل نے کہا کہ کھیل موسیقی کی طرح لوگوں کو ایک دوسرے کے قریب لے کر آتا ہے۔

’’یہ لوگ حقیقتاً بہت سپیشل ہیں۔ یہ غیرمعمولی لڑکے اور لڑکیاں اپنے ملک کے لیے بہت کچھ کر رہے ہیں۔ یہ اپنے ملک کے سچے سفیر ہیں۔ یہ اس موسم گرم میں دوسرے ممالک سے لاس اینجلس آنے والے 7,000 کھلاڑیوں میں پاکستان کی نمائندگی کریں گے۔ میرا خیال ہے کہ یہ بہت اچھا کھیلیں گے۔‘‘

فرح وہرہ اس سے پہلے بھی سپیشل اولمپکس میں پاکستان کی نمائندگی کر چکی ہیں اور متعدد انعامات جیت چکی ہیں۔

پاکستان میں سپیشل اولمپکس کے نیشنل سپورٹس ڈائریکٹر ارشد جاوید ان کھیلوں میں پاکستان کی کارکردگی کے بارے میں خاصے پر امید ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ’’سپیشل اولمپکس کا مقصد شرکت ہے۔ اس میں ہر کوئی فاتح ہوتا ہے اور کوئی بھی ہارنے والا نہیں ہوتا۔ ایتھلیٹس بہت پر امید ہیں، بہت محنت سے ٹریننگ کر رہے ہیں۔‘‘

ان کا کہنا تھا کہ ’’ماضی میں بھی ہم ورلڈ سمر گیمز میں شرکت کرتے رہے ہیں، اس میں ہمارا نتیجہ سو فیصد رہا ہے اور ہم یہی توقع کر رہے ہیں کہ اس بار بھی جب لاس اینجلس سے ٹیم پاکستان واپس آئے گی تو ہر ایتھلیت کے گلے میں میڈل ہو گا۔‘‘

اسپیشل اولمپکس کا خیال 1950 کی دہائی میں اس وقت پروان چڑھا جب امریکہ کے سابق صدر جان ایف کینیڈی کی ہمشیرہ یونیس کینیڈی شریور نے ذہنی طور پر معذور نوجوانوں کے لیے سمر ڈے کیمپ کا اہتمام کیا۔ پہلے سپیشل اولمپکس سمر گیمز 1968 میں امریکہ کے شہر شکاگو میں منعقد کیے گئے۔

XS
SM
MD
LG