رسائی کے لنکس

پروفیسرڈیفنی ہرنینڈس نے کہا کہ تحقیق کی دلچسپ بات یہ تھی کہ صرف ایک دائمی خاندانی دباؤ، 'ماں کی خراب صحت' نو عمر لڑکوں کے وزن کے ساتھ منسلک تھی یا اس کا 18 سالہ نوجوانوں کےموٹاپے کے ساتھ تعلق تھا۔

اسی ماہ شائع ہونے والی ایک تحقیق سے ظاہر ہوا ہے کہ بچپنے میں طویل مدت تک خاندانی دباؤ کا سامنا کرنے والے بچوں میں آگے چل کر نوجوانی میں زائد الوزن ہونے یا موٹاپےکا امکان ہوتا ہے۔

طبی جریدے 'پریو ینٹیو میڈیسن' کی جائزہ رپورٹ میں خاندانی پریشانیوں کی طویل مدتی نمائش کا، بچوں کی نوجوانی کے وزن کے ساتھ تعلق کا پتہ چلا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ نوجوانی میں وزن کی زیادتی آگے چل کر بڑے صحت کے مسائل جیسے ذیابیطس، دل کی بیماریاں اور فالج کے خطرے کے امکان کو بڑھا دیتی ہیں۔

یونیورسٹی آف ہیوسٹن میں ہیلتھ اینڈ ہیومن پرفارمنس ریسرچ سینٹر سے وابستہ اسسٹنٹ پروفیسر ڈیفنی ہرنینڈس نے کہا کہ "وہاں طویل مدت تک خاندان میں موجود تین الگ الگ اقسام کے دباؤ کو برداشت کرنے کا 18 سال کے نوجوانوں کے وزن کےساتھ تعلق موجود تھا۔"

ماہرین کی ٹیم نے نوجوانوں کے ایک مطالعے کے اعداد و شمار کے تجزیہ میں تین مخصوص طرح کی خاندانی پریشانیوں مالیاتی دباؤ، ماں کی خراب صحت اور خاندان میں ناچاقی کے دباؤ کی جانچ پڑتال کی اور پھر 1975 سے 1990 کے درمیان پیدا ہونے والے 4700 نو عمر افراد کے ڈیٹا پر ان کا اطلاق کیا۔

تجزیہ کار فرنینڈس نے کہا کہ نتائج واضح طور پر بتا رہے تھے کہ بچپنے میں خاندانی دباؤ کا سامنا کرنا، خاص طور پر 'والدین میں ناچاقی' اور 'مالیاتی دباؤ' کو طویل عرصے تک برداشت کرنا کا 18 سال کی کمسن لڑکیوں کے وزن یا موٹاپے کے ساتھ گہرا تعلق تھا۔

انھوں نے مزید کہا کہ تحقیق کی دلچسپ بات یہ تھی کہ صرف ایک دائمی خاندانی دباؤ، 'ماں کی خراب صحت' نو عمر لڑکوں کے وزن کے ساتھ منسلک تھی یا اس کا 18 سالہ نوجوانوں کےموٹاپے کے ساتھ تعلق تھا۔

پروفیسر فرنینڈس کے مطابق مجموعی طور پر نتیجے سے ثابت ہوا کہ خواتین اور نو عمر لڑکوں نے خاندانی کشیدگی کے لیے مختلف ردعمل ظاہر کیا۔

پروفسر فرنینڈس نے کہا کہ یہ تحقیق خاندان کے مسائل پر توجہ مرکوز رکھتے ہوئے خاندانی دباؤ اور موٹاپے کے بارے میں ہماری معلومات میں توسیع کرتی ہے۔

بقول پروفیسر فرنینڈس لڑکیوں اور لڑکوں پر اثر انداز ہونے والے خاندانی دباؤ کی اقسام جان لینے کے بعد سماجی خدمات کے پروگراموں میں وسعت لائی جا سکتی ہے۔

خاص طور پر یہ نتیجہ اسکول کی بنیاد پر موٹاپے کی روک تھام کے پروگراموں کے لیے اہم ہے جہاں اب تک بچوں کی خوراک اور جسمانی سرگرمیوں پر توجہ مرکوز رکھی جاتی ہے۔

محقق فرنینڈس نے تجویز کیا کہ بچپنے میں خاندانی کشیدگی کے ساتھ مدد کرنے کی حکمت عملی تیار کرنے سے بچوں کو نوجوانی میں صحت مند وزن برقرار رکھنے میں مدد مل سکتی ہے۔

XS
SM
MD
LG